ہیومن رائٹس سوسائٹی نے 35 ویں انسانی حقوق کے ایوارڈز کا اعلان کر دیا

ہیومن رائٹس سوسائٹی نے 35 ویں انسانی حقوق کے ایوارڈز کا اعلان کر دیا

لاہور( پ ر) ہیومن رائٹس سوسائٹی آف پاکستان نے 35 ویں انسانی حقوق ایوارڈز کا اعلان کر دیا۔ سوسائٹی کے سیکرٹری جنرل اے ایم شکوری نے بتایا کہ ایوارڈز کمیٹی کااجلاس سوسائٹی کے چیئرمین سینٹر ایس ایم ظفر کی صدارت میں منعقد ہوا۔ کمیٹی نے متفقہ طور پر ایوارڈز کے فیصلے کئے۔ اس سلسلہ میں پہلا ایوارڈ آرمی پبلک سکول پشاور کی شہید پرنسپل طاہرہ قاضی کو دیا گیا۔ جنہوں نے اپنی جان کی بازی ہار کر اپنے سکول کے سینکڑوں بچوں کی جانیں بچائیں۔ دوسرا ایوارڈ شہید صحافی سلیم شہزاد کے لئے رکھا گیا ہے جنہوں نے بنیادی انسانی حقوق کے حوالے سے بعض اداروں کے قانونی حدود سے تجاوز کے خلاف اور جہادی تنظیم کی جابر کارروائی کے خلاف تحقیق کرتے ہوئے مسلسل قلمی جہاد کیا جس کی وجہ سے انہیں اغواء کے بعد قتل کر دیا گیا۔ انسانی حقوق کا تیسرا ایوارڈ ڈاکٹر امجد ثاقب کو دیا گیا جو اپنے رفاعی ادارے اخوت کے ذریعے بچوں، عورتوں اور مردوں کی فلاح کے لئے کام کر رہے ہیں۔ چوتھے ایوارڈ کے لئے بلوچستان کے وزیر اعلیٰ ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ کو نامزد کیا گیا جو شورش زدہ صوبے بلوچستان میں قیام امن اور معصوم انسانی جانوں کے تحفظ کے لئے کوشاں ہیں ۔ ایوارڈ کمیٹی کے اجلاس میں سینیٹر ایس ایم ظفر ، جسٹس منیر اے شیخ، ڈاکٹر الیگزینڈر جان ملک، ڈاکٹر مجاہد کامران، بیگم مہناز رفیع، سید عاصم ظفر، پروفیسر ہمایوں احسان، چودھری بشیر احمد ایڈووکیٹ، ڈاکٹر بلال اسلم صوفی، خالد نیاز خواجہ، ادیب جاودانی، شاہدہ طاہر، چودھری لیاقت علی ایڈووکیٹ، سید تنویر عباس تابش، نذیر احمد چودھری ایڈووکیٹ ، محمد شجاع بابا ایڈووکیٹ اورمجیب قریشی اور اے ایم شکوری نے شرکت کی۔

مزید : میٹروپولیٹن 4