کراچی آپریشن مین تیزی ، رینجرز نے 84افراد کو حراست میں لے لیا

کراچی آپریشن مین تیزی ، رینجرز نے 84افراد کو حراست میں لے لیا

  کراچی ( کرائم رپورٹر) اتحاد ٹاؤن میں دہشت گرد وں کے حملے میں رینجرز اہلکاروں کی شہادت کے بعد کراچی ٹارگیٹڈ آپریشن میں تیزی آگئی ہے ۔پاکستان رینجرز سندھ نے منگل کو شہر کے مختلف علاقوں میں سرچ آپریشن اور ٹارگیٹڈ کارروائیاں کرتے ہوئے سیاسی جماعت کے کارکنوں اور کالعدم تنظیم کے کارندوں سمیت 83افراد کو حراست میں لے لیا ہے ۔ تفصیلات کے مطابق منگل کی صبح رینجرز کی بھاری نفری نے ناتھا خان گوٹھ کے علاقے ہزارہ گوٹھ کو گھیرے میں لے کر سرچ آپریشن کیا ۔ اس دوران گھر گھر تلاشی لی گئی اور 40 مشتبہ افراد کوحراست میں لے لیا ۔ اس موقع پر ہزارہ گوٹھ کے داخلی و خارجی راستے بند کرکے اندر اور باہر جانے پر پابندی عائد کر دی گئی تھی ۔ آپریشن کالعدم تنظیم کے کارکنوں اور خطرناک دہشتگردوں کی موجودگی پر کیا گیا ۔ آپریشن میں خواتین رینجرز اہلکاروں نے بھی حصہ لیا ۔ ہزارہ گوٹھ منشیات فروش اور دیگر جرائم پیشہ افراد کی آماجگاہ بن گیا ۔ آپریشن کے دوران کسی قسم کی مزاحمت نہیں کی گئی ۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ کالعدم تنظیم کے کارندے آپریشن شروع ہوتے ہی علاقے سے فرار ہو گئے تھے ۔ ادھررینجرز اور پولیس نے پیر آباد کے مختلف علاقوں اورنگی ٹاؤن ، بنارس ، میٹروول ، منگھوپیر ، سلطان آباد سمیت دیگر علاقوں میں سرچ آپریشن کرتے ہوئے داخلی و خارجی راستوں کو رکاوٹیں لگا کر سیل کر دیا گیا اور گھر گھر تلاشی کے دوران 40 مشتبہ افراد کو حراست میں لے کر تفتیش کے لیے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا ۔باخبر ذرائع نے بتایا کہ زیر حراست افراد کا تعلق سیاسی و کالعدم جماعتوں سے ہے اور ان کے قبضے سے اسلحہ برآمد ہوا ہے ۔ مذکورہ آپریشن میں خواتین اہلکاروں نے بھی حصہ لیا ۔ ذرائع نے بتایا کہ زیر حراست افراد میں جرائم پیشہ افراد بھی شامل ہیں جو کہ قانون نافذ کرنے والے اداروں کو مطلوب تھے ۔ دوسری جانب رینجرز نے نارتھ ناظم آباد کے علاقے میں کارروائی کرتے ہوئے 4دہشت گردوں کو گرفتار کرلیا ہے ۔ذرائع کے مطابق گرفتار دہشت گردوں کا تعلق کالعدم تنظیم سے ہے ۔دہشت گردوں کے قبضے سے اسلحہ بھی برآمد ہوا ہے ۔گرفتار دہشت گردوں کو تفتیش کے لیے نامعلوم مقام پر منتقل کردیا گیا ہے ۔

مزید : کراچی صفحہ اول