پولیس نے صحافی کے اندھے قتل کا سراغ لگا لیا، بھائی سمیت 2ملزمان گرفتار

پولیس نے صحافی کے اندھے قتل کا سراغ لگا لیا، بھائی سمیت 2ملزمان گرفتار
پولیس نے صحافی کے اندھے قتل کا سراغ لگا لیا، بھائی سمیت 2ملزمان گرفتار

  

کوہاٹ(صباح نیوز)کوہاٹ پولیس نے صحافی کے اندھے قتل کا سراغ لگاتے ہوئے ملزمان کو گرفتار کر لیا ہے۔پولیس نے صحافی حفیظ الرحمان قتل کیس کو72گھنٹوں کے اندر حل کرتے ہوئے 25نومبر کی صبح قاتلوں کو گرفتار کرلیا ہے۔حفیظ الرحمان مقامی اخبار نوائے ایشیاءکے چیف ایڈیٹر اورکوہاٹ کیبل نیٹ ورک ایسوسی ایشن کے صدر تھے جبکہ نجی ٹی وی چینل سے بھی ضلعی نمائندے کے طور پر وابستہ رہے جسے 22نومبر کے روز کوہاٹ شہر کے علاقہ کالو خان بانڈہ میں نامعلوم حملہ آوروں نے گولی مار کرقتل کیا تھا۔ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر کوہاٹ محمد صہیب اشرف نے ڈی ایس پی سٹی ملک لعل فرید ،ایس ایچ او تھانہ سٹی اسلام الدین اور ایس ایچ او تھانہ چھاﺅنی عمر حیات کے ہمراہ ہنگامی نیوز کانفرنس کے دوران بتایا کہ پولیس تحقیقات کے مطابق مقتول صحافی کرائے کے تین قاتلوں کے تعاون سے اپنے بھائی کی طرف سے مارا گیا تھا۔پولیس کی تحقیقاتی ٹیم کیس کی مختلف زاویوں سے تفتیش کے ذریعے ملزمان کا سراغ لگانے میں کامیاب اور عدالتی کاروائی کے ذریعے ملزمان کا شناخت کرنے کے قابل ہوئی ۔پولیس نے مقتول صحافی کے قتل میں ملوث انکے بھائی عاصم نعیم اور کرایہ کے ایک قاتل محترم کو گرفتار کرکے واردات میں استعمال ہونے والی موٹر سائیکل بھی قبضے میں لے لی ہے جبکہ شریک جرم مزید دو ملزمان کی گرفتاری کی کوششیں جاری ہیں جنکی گرفتاری جلد عمل میں لائی جائے گی تاہم آپریشنل اور انوسٹی گیشن وجوہات کی بناءپر انکے نام صیغہ راز میں رکھے جارہے ہیں۔پولیس کے سامنے اپنے بیان میں مقتول صحافی کے بھائی نے بتایا کہ اس نے اپنے بھائی کو قتل کرنے کی سازش رچائی ۔وراثت میں حصہ سے انکار اور دولت کی غیر منصفانہ تقسیم کے بارے میں ملزم نے کہا کہ انکا بھائی آمدنی اور خاندانی دولت میں حصہ دینے سے انکاری تھا جس نے اسکے بجائے دوسروں کی مالی اعانت کرنے کی وجوہات پر اپنے بھائی کو قتل کر دیا ہے۔تحقیقات کے دوران مجرمان گزشتہ پانچ ماہ سے زہر اور دیگر ذرائع سے صحافی حفیظ الرحمان کے قتل کے عزائم حاصل کرنے کی کوشش کر رہے تھے تاہم زہر خورانی کے ذریعے ہلاکت کے منصوبے میں ناکامی پر 6لاکھ روپے کے عوض حملہ آوروں کی خدمات حاصل کئے اور یوں انہیں اجرتی قاتلوں کی مدد سے موت کے گھاٹ اتار دیا گیا۔ملزمان نے مزید انکشاف کیا ہے کہ 16نومبر کو قتل کے ارادے سے حملہ کرنے کی ناکام کوشش کی گئی لیکن حفیظ نے اس روز وہ راستہ استعمال نہیں کیا جس میں ملزمان گھات لگائے بیٹھے تھے اور یوں انہیں ناکامی ہوئی ۔گرفتار ملزمان نے میڈیا کے سامنے بھی حفیظ الرحمان کو قتل کرنے کے منصوبے کا اعتراف کر لیا ہے۔انہوں نے اس بات کا اقرار کیا کہ واردات میں استعمال ہونے والی موٹر سائیکل ایک دوست سے حاصل کی جبکہ سلنسر لگی آلہ قتل30بور پستول علاقہ غیر درہ آدم خیل سے لائی گئی اور قتل کی سازش لالچ کے تحت کالو خان بانڈہ میں واقع مقتول کے باغ میں تیار کی گئی۔پریس کانفرنس کے دوران میڈیا کے نمائندوں نے پولیس انتظامیہ کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے قلیل وقت میں اندھے قتل کی اس واردات میں ملوث ملزمان کو بے نقاب کرنے کی پیشہ ورانہ کارکردگی کو بے حد سراہا۔

مزید :

کوہاٹ -