سپریم کورٹ میں ایڈہاک ججوں کے تقرر کا فیصلہ،پاکستان بار کونسل نے مخالفت کردی

سپریم کورٹ میں ایڈہاک ججوں کے تقرر کا فیصلہ،پاکستان بار کونسل نے مخالفت کردی
سپریم کورٹ میں ایڈہاک ججوں کے تقرر کا فیصلہ،پاکستان بار کونسل نے مخالفت کردی

  


لاہور(نامہ نگار خصوصی)پاکستان بار کونسل نے سپریم کورٹ میں ایڈہاک ججوں کی تعیناتیوں کے فیصلے کی مخالفت کرتے ہوئے چیف جسٹس پاکستان سے مطالبہ کیا ہے کہ اس فیصلے کو فوری طور پرواپس لیا جائے۔چیئرمین ایگزیکٹو کمیٹی پاکستان بار کونسل احسن بھون کی طرف سے جاری بیان کے مطابق چیف جسٹس پاکستان سے کہا گیا ہے کہ سپریم کورٹ میں ایڈہاک بنیادوں پر ججز کی تعیناتیوں سے عدلیہ کی آزادی اور عوام پر اس کا اعتماد بری طرح متاثر ہو گا، چیف جسٹس پاکستان نے تین دسمبر کو لاہور میں دو سابق ججز طارق پرویز اور خلجی عارف حسین کی دوبارہ سپریم کورٹ میں ایڈہاک بنیادوں پر تعیناتی کی سفارشات کے لئے جوڈیشل کمیشن کا اجلاس طلب کر رکھا ہے، پاکستان بار کونسل کے بیان میں کہا گیا ہے کہ سپریم کورٹ بار اور پاکستان بارکونسل متعدد مرتبہ ایڈہاک بنیادوں اور میرٹ سے ہٹ کر ججز کی تقرریوں کے خلاف متفقہ قرار دادیں منظور کر چکی ہیں، ریٹائرڈ جج کی دوبارہ تعیناتی کی حوصلہ افزائی نہیں کرنی چاہیے، اس عمل سے ادارے کا تشخص خراب ہوتا ہے، ایڈہاک بنیادوں پر ججز کی تعیناتیوں کی وجہ سے پہلے ہی عدلیہ کا تشخص بری طرح متاثر ہو گا، اعلامیے میں پاکستان بار کونسل نے مطالبہ کیا ہے کہ سپریم کورٹ میں دو ججز کی ایڈہاک بنیادوں پر تعیناتیوں کا فیصلہ واپس لیا جائے۔

مزید : لاہور