ادائیگیاں نہ ہونے سے ڈرامہ انڈسٹری مشکلات کا شکار ہوگئی

  ادائیگیاں نہ ہونے سے ڈرامہ انڈسٹری مشکلات کا شکار ہوگئی

  



لاہور(فلم رپورٹر)شوبز کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی شخصیات کا کہنا ہے کہ ڈرامہ انڈسٹری ایک بار پھر شدید مالی بحران سے دوچار ہوگئی،بیک وقت تین سے چارڈرامہ سیریل تیار کرنے والے پروڈکشن ہاؤسز کئی ماہ سے چینلز کی جانب سے ادائیگیاں نہ ہونے کی وجہ سے ایک ڈرامہ سیریل بھی مشکل سے بنا پارہے ہیں۔شوبز شخصیات نے کہا کہ ان حالات کی وجہ سے آصف رضا میر کا پروڈکشن ہاؤس طویل عرصے سے بند پڑاہے، فہد مصطفی اور ڈاکٹر علی کاظمی نے بھی کام روک دیاہے۔ ہمایوں سعید، اعجاز اسلم اورعدنان صدیقی نے بھی کئی ڈراموں کی تیاری موخر کردی،فنکاراور دیگر افراد بھی ادائیگیاں نہ ہونے سے پریشان ہیں۔ لاہور اور کراچی میں کئی پروڈکشن ہاؤسز نے متعدد فنکاروں کی ڈرامہ مکمل ہون ے کے باوجود ادائیگیاں نہیں کی ہیں یہ بات انتہائی قابل تشویش ہے۔شاہد حمید،شان،معمر رانا،مسعود بٹ،پرویز کلیم،میگھا،ماہ نور،شاہدہ منی،لائبہ علی،سہراب افگن،سٹار میکر جرار رضوی،یار محمد شمسی صابری،گلفام،ہانی بلوچ،اچھی خان،ذویا قاضی،مایا سونو خان،ڈیشی راج،آغا قیصر عباس،سدرہ نور،ندا چوہدری،آفرین خان،آفرین پری،آشا چوہدری،عامر راجہ،بی جی،سفیان احمد،انوسنٹ اشفاق،محرمہ علی،عباس باجوہ،آغا حیدر،شین فریال،نادیہ علی،سوھنی بلوچ،اشرف خان،عذرا آفتاب،حیدر سلطان،بابرہ علی،تابندہ علی،ڈاکٹر اجمل ملک،مختار احمد چوہان،فیصل بخاری،چوہدری اعجاز کامران،قیصر ثناء اللہ خان،حاجی عبد الرزاق،پریسہ،حنا ملک،شہزاد چندا،ہنی البیلا،حسن مراد،امان اللہ،نجم زیدی،ثمینہ بٹ،سرفراز وکی،بینا سحر،عائشہ جاوید،ابرار ہاشمی،وقاص کیدو،زری لعل،شہہ پارہ،ستارہ بیگ،لکی ڈیئر،طاہر نوشاد،مختار چن،اسد مکھڑا،شجر عباس،نواز انجم،احمد نواز،محسن گیلانی،دلاور ملک،عباس اشرف،افشین اشرف،بینا چوہدری اور دیگر کا کہنا ہے کہ ہمیں ایسی تمام باتوں سے گریز کرنا چاہیے جن کی وجہ سے فلم یا ڈرامہ انڈسٹری کو نقصان پہنچنے کا اندیشہ ہو۔

مزید : کلچر