ناروے میں قرآن مجید کی بے حرمتی کیخلاف سینیٹ میں مذمتی قرار داد پیش   

 ناروے میں قرآن مجید کی بے حرمتی کیخلاف سینیٹ میں مذمتی قرار داد پیش   

  



 اسلام آباد (آن لائن) سینیٹ میں ناروے میں قرآن مجید کو نذرآتش کرنے کے واقعے کے حوالے سے مذمتی قرار داد پیش کردی گئی۔ سینیٹر کامران مائیکل کی جانب سے پیش کردہ  مذمتی قرارداد میں کہا گیا ہے پاکستان کی عوام، ارکان سینیٹ اور پاکستان میں بسنے والی تمام اقلیتیں اس گھناؤنے اقدام کی پرزور مذمت کرتے ہیں اور تمام بین الاقوامی ممالک خصوصا ناروے کی حکومت سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ آزادی رائے کے نام پر اس قسم کی مذموم حرکات کی حوصلہ شکنی کرے اور ایسے گھناؤنے اقدام  میں ملوث افراد کو قانون کے کٹہرے میں لایا جائے۔ آن لائن کو موصول ہونے والی دستاویز میں کہا گیا ہے کہ ”سینیٹ آ ف پاکستان کا یہ ایوان ناروے میں پیش آنے والے افسوسناک واقعہ کی پر زور مذمت کرتا ہے جس میں ایک شر پسند نے قرآن مجید کو جلانے کی ناپاک و گھناؤنی حرکت کی۔ہم سمجھتے ہیں کہ آج کی مہذب دنیا میں اس قسم کی حرکات مذہبی جذبات کو مجروح کرنے اور عالمی سطح پر بین المذاہب ہم آہنگی کو نقصان پہنچانے کا مؤجب ہیں. پاکستان کی عوام، ارکان سینیٹ اور اقلیتیں اس گھناؤنے اقدام کی پر زور مذمت کرتے ہوئے تمام ممالک خصوصا ناروے کی حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ آزادی اظہار رائے کے نام پر اس قسم کی مذموم حرکات کی حوصلہ شکنی کریں اور اس گھناونے اقدام میں ملوث شخص کو قانون کے کٹہرے میں لایا جائے۔حکومت پاکستان اس مسئلے کو بھرپور اور موثر طریقے سے عالمی سطح پر اٹھائے۔واضع رہے کہ یہ مذمتی قرارداد سینیٹر کامران مائیکل کی جانب سے پیش کی گئی ہے، جس پر دیگر اقلیتی ممبران کے دستخط بھی موجود ہیں۔

قرار داد پیش

مزید : صفحہ اول