پشاور میں بجلی لوڈشیڈنگ کا سلسلہ تیز،عوامی حلقوں کا نوٹس لینے کا مطالبہ

پشاور میں بجلی لوڈشیڈنگ کا سلسلہ تیز،عوامی حلقوں کا نوٹس لینے کا مطالبہ

  



پشاور (سٹی رپورٹر)سردی کی شدت میں اضافہ ہوتے ہی پشاور میں بجلی لوڈشیڈنگ کا سلسلہ تیز ہو گیا جس پر عوام نے حکومت سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔ اندورن شہر کے علاقوں میں چھ سے آٹھ جبکہ مضافاتی علاقوں میں 12 سے سولہ گھنٹے تک بجلی بندش کا دورانیہ بڑھا دیا گیا۔شہریوں کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ  حکومت نے چند ماہ قبل لوڈشیڈنگ خاتمے کااعلا ن کیا تھا لیکن سردی کی شدت میں اضافے کے ساتھ بجلی کی بندش کا سلسلہ دوبارہ شروع ہوگیا جبکہ وولٹیج بھی انتہائی کم ہے۔عوام کا کہنا ہے کہ بجلی کے نرخوں میں روز بروز اضافہ ہو تاجا رہا ہے لیکن پھر بھی لوڈشیڈنگ کا خاتمہ نہ ہو سکا۔انہوں نے کہاکہ بجلی کی طویل اور غیر اعلانیہ لوڈشیڈ نگ سے گھروں اور مساجد میں پا نی کا شدید قلت پیدا ہو چکی ہے، بجلی نہ ہونے کی وجہ سے خواتین گھروں میں ہیٹروں کی بجا ئے لکڑیوں کے ذریعے کھا نا تیار کرتی ہیں اور انہیں لکڑیاں بھی دور دراز سے لانا پڑتا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ بجلی کی سب سے زیادہ پیداوار خیبر پختونخوا میں کی جاتی ہے لیکن لوڈشیڈنگ بھی یہاں پر ہو رہی ہے جس کی وجہ نہ صرف شہریوں کو گھریلو معاملات میں مشکلات درپیش ہیں بلکہ سینکڑوں کارخانے بھی بند ہیں۔شہریوں نے کہاکہ واپڈا کی غفلت کی وجہ سے انہیں ہر ماہ اضافی بلز کی ادائیگی کر نا پڑتا ہے اور انہیں بلوں میں اضا فی یونٹ ڈالے جاتے ہیں۔شہریوں کے مطابق اگر لوڈشیڈنگ کاخاتمہ نہ کیا گیا تو وہ احتجاج کرینگے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر