ڈیرہ‘ (SADP) کی بندش کے منصوبے کیخلاف ذیلی تنظیموں کا احتجاج

ڈیرہ‘ (SADP) کی بندش کے منصوبے کیخلاف ذیلی تنظیموں کا احتجاج

  



ڈیرہ اسما عیل خان(بیورو رپورٹ) پی ٹی آئی حکومت کا ڈیرہ اسماعیل خان، ٹانک اور لکی مروت کے اضلاع کیلئے ورلڈ بنک کے تعاون سے اڑھائی ارب روپے کے ترقیاتی فنڈز سے دیہی علاقوں میں گلیوں اور روڈز کی تعمیر کے علاوہ نکاسی آب کے نالوں کی تعمیر کیلئے کام کرنے والے ادارے ”سدرن ایریا ڈویلپمنٹ پراجیکٹ“(SADP) کی بندش کے منصوبے کیخلاف ذیلی تنظیموں کا احتجاج، حکومت سے فیصلے پر نظر ثانی کا مطالبہ۔ تفصیلات کے مطابق ”سدرن ایریا ڈیوپلمنٹ پراجیکٹ“(SADP) ورلڈ بنک کے تعاون سے اڑھائی ارب روپے کے ترقیاتی فنڈز سے ڈیرہ اسماعیل خان، ٹانک اور لکی مروت کے اضلاع کے دیہی علاقوں میں گلیوں اور روڈز کی تعمیر کے علاوہ نکاسی آب کے نالوں کی تعمیر کیلئے کام کررہا ہے۔ ان علاقوں میں ترقیاتی منصوبوں کیلئے 13سو سے زائد ذیلی تنظیمیں بنائی گئی ہیں۔ صوبائی حکومت کی جانب سے جنوبی اضلاع میں ”سدرن ایریا ڈیوپلمنٹ پراجیکٹ“(SADP) کی بندش کے منصوبے اور فنڈز کی دیگر اضلاع منتقلی کیخلاف جی پی او موڑ پر مقامی تنظیموں کے نمائندوں کی جانب سے احتجاجی ریلی نکالی گئی۔ ریلی کے شرکاء نے ہاتھوں میں کتبے اور بینر اٹھا رکھے تھے جن پر پروگرام کی مبینہ بندش کیخلاف نعرے درج تھے۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ ”سدرن ایریا ڈیوپلمنٹ پراجیکٹ“(SADP) جون2013ء میں قائم کیا گیا جو اب تک 6سال سے زائد عرصہ سے کام کر رہا ہے، تین اضلاع میں یہ پراجیکٹ کام کررہا ہے جسکے پراجیکٹ ڈائریکٹر کا ایڈیشنل چارج کمشنر ڈیرہ جاوید خان مروت کے پاس ہے، اب تک ایک ارب روپے کی لاگت سے 370سکیموں کو مکمل کیا گیا ہے جبکہ 50نئی سکیموں کی منظوری کیلئے پی سی ون تیار کیا گیا ہے۔ یہ واحد پراجیکٹ ہے جس میں کمیشن نام کی کوئی چیز نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان سکیموں کو مقامی13سو تنظیموں کے نمائندوں کے ذریعے مکمل کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ افسوس کی بات ہے کہ خیبر پختونخوا حکومت اس منصوبے کو دسمبر2019میں ختم کرنا چاہتی ہے اور اس پراجیکٹ کا فنڈ بلدیات اور ٹورازم کے حوالے کرکے ممبران اسمبلی کے ذریعے مذکورہ فنڈز کی تقسیم کرنا چاہتی ہے جسکی ہم شدید مذمت کرتے ہیں۔ اس اہم پراجیکٹ کو ختم نہ کیا جائے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر