مہنگائی سے عام آدمی کا جینا محال،ملک میں فوری شفاف انتخابات کا انعقاد ناگزیر ہے:راجہ ظفر الحق

مہنگائی سے عام آدمی کا جینا محال،ملک میں فوری شفاف انتخابات کا انعقاد ...

  



ایبٹ آباد (ڈسٹرکٹ رپورٹر)  مسلم لیگ ن کے سینئر رہنماء سینیٹر راجہ ظفر الحق نے کہا ملک میں فوری  شفاف الیکشن ضروری ہوچکے ہیں کیونکہ مہنگائی اور بے انصافی سے پورا ملک شکنجہ میں آ یا ہوا ہے اوپر سے انکا ماحول ناقابل برداشت ہو رہا ہے اور ان کے  حامی بھی متنفر ہو رہے ہیں،مہنگائی سے عام آدمی کی زندگی اجیرن ہو چکی ہے ہم یہ سمجھتے ہیں اب کسی کو کچھ کہنے کی ضرورت نہیں  ہے،میاں نواز شریف صحت یاب ہوکر ضرور واپس آ ئیں گے وہ ایبٹ آ باد میں مسلم لیگ ن کے سینیئر نائب صدر سردار عبد الرشید  کے بیٹے کی دعوت ولیمہ پر میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے، اس موقع پر سابق گورنر خیبر پختون خوا سردار مہتاب احمد خان،سینیٹر بیرسٹر جاوید عباسی،مسلم لیگ ن خیبر پختون خوا اسمبلی کے پارلیمانی لیڈر سردار اورنگزیب نلوٹھہ کے علاوہ ضلعی  جنرل سیکرٹری ملک شفیق اعوان،ندیم مغل،و تحصیل کے عہدیداران بھی موجود تھے، سینیٹر راجہ ظفر الحق کا کہنا تھا ملک میں دوبارہ الیکشن کروایا جائے، شفاف انتخابات ہوں اس میں کسی کی  کوئی مداخلت نہ ہو، انہوں نے کہا کہ  جمعیت علماء اسلام کے سربراہ  مولانا فضل الرحمان  کا شہر اقتدار میں  آزادی مارچ پر عزم اجتماع تھا جس میں  کوئی توڑ پھوڑ نہیں ہوئی،کسی ایمبولینس کا راستہ روکنے کی کوشش نہیں ہوئی جو ملک کی تاریخ کا عظیم اجتماع تھا انہوں نے آگے کے لائحہ عمل کے بارے میں بتایا  رہبر کمیٹی میں  اپوزیشن کی ہر پارٹی کا ایک ایک نمائندہ ہے جو تمام  فیصلوں میں شریک ہوتے ہیں، سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف کے بارے حکومتی قیاس آرائیوں کی نفی کرتے ہوئے بتایا انکی بیماری کے متعلق  ڈاکٹرز کا بورڈ حکومت نے خود بنایا تھا  جس میں شوکت خانم کے سربراہ نے میاں نواز شریف کی بیماری کو تشویشناک قرار دیا تھا کیونکہ  انکی تلی میں کچھ مسئلہ تھا یہاں اس کی تشخیص اور علاج ممکن نہیں تھا اب ان کے انگلینڈ میں ٹیسٹ ہو رہے شوگر اور دل کے امراض ہیں اور دل میں سات اسٹنٹ موجود ہیں،پہلے بھی یہاں  اسٹنٹ تبدیلی کے دوران بلیڈنگ شروع ہوئی تھی اس پر  بائر سے ڈاکٹر کو بلایا گیا تھا جس سے انکا علاج کیا اور سختی سے تاکید کی  وہ یہاں علاج نہ کروائیں،انہوں نے کہا میاں نواز شریف کے بارے میں حکومت اور  عمران خان کے الفاظ درست نہیں تھے انہیں کوئی غلط بریفنگ دیتا ہے جس سے انکی بعد میں سبکی بھی ہوتی ہے  انہوں نے کہا کہ وہ جہاز کی سیڑھیوں پر   بھاگ کر اوپر چڑھے  حالانکہ اس وقت ادھر کچھ لوگ موجود تھے  وہ ہم سے بھی نہیں مل سکے،گاڑی سے ہی ہاتھ ہلا یا تھا انہوں نے کہا کہ عمران خان  اپنے آپ کو اتنا اونچا نہ کریں  کہ اللہ تعالیٰ ناراض ہو،میں سمجھتا ہوں میاں نواز شریف واپس آئیں گے انکا پچھلا۔ ریکارڈ سب کے سامنے ہے کیونکہ پہلے بھی اپنی مرحوم اہلیہ کو زندگی اور موت کی کشمکش میں چھوڑ کر اپنی بیٹی کا ہاتھ پکڑ کر آئے تھے اور جیل میں ناکافی صورتحال کے باوجود مستحکم رہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر