”کتا چھوڑیں، مظلوم مارے گئے“رﺅوف کلاسراکی ایک بار پھر حکومت پر تنقید

”کتا چھوڑیں، مظلوم مارے گئے“رﺅوف کلاسراکی ایک بار پھر حکومت پر تنقید
”کتا چھوڑیں، مظلوم مارے گئے“رﺅوف کلاسراکی ایک بار پھر حکومت پر تنقید

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سینئرصحافی روف کلاسرا نے ایک بار پھر حکومت کو تنقید کانشانہ بنایاہے۔عمران خان کا نام لئے بنا انہوں نے کہاکہ سانحہ ساہیوال کے بعد وہ قول دوبارہ نہیں سنا کہ دریائے دجلہ/فرات کنارے کتا بھی مرا تو خدا حساب لے گا،روف کلاسرا نے سانحہ ساہیوال کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کتاچھوڑیں یہاںتو مظلوم مارے گئے ہیں۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر کی گئی ایک پوسٹ میں انہوں نے کہا”قیامت کے روز پائی پائی کا حساب تو ہوگا کچھ حساب ساہیوال کے قتل عام میں ماں باپ کھونے والے مظلوم بچوں کا بھی ہوگا یا صرف چائے پانی کا حساب دینا ہوگا؟ ویسے ساہیوال قتل عام بعد کبھی پھر نہیں نہیں سنا کہ دریائے دجلہ/فرات کنارے کتا بھی مرا تو خدا حساب لے گا۔کتا چھوڑیں مظلوم مارے گئے“

روف کلاسرا کے ٹویٹ پر لوگوں نے ملے جلے ردعمل کااظہارکیاہے۔آصف نامی صارف نے لکھا کہ ”جس ملک میں چیف جسٹس خود شراب برآمد کرے اور بعد میں وہ شراب شہد۔بن جائے۔ماڈل ٹاون میں دن دہاڑے حاملہ عورتوں پر بھی گولیاں چلائی گئیں۔وزیراعظم کو نیچے کا عملہ غلط رپورٹنگ کرے ایک دوسرے شخص کی بیماری کے اوپر۔اور آپ جیسے صحافی جس ملک میں ہوں اس ملک کا اللہ ہی حافظ ہے“

اقبال اینڈ امتیاز آفریدی نے لکھا”قیامت کے دن آپ صحافی برادری سے پوچھا جائے گا کہ قلم کا استعمال کیسے کیا امیروں کے پردہ پوشی کی جسطرح FIR01/09FIAمنی لانڈرنگ کیس میں ملک کرنسی ایکسچینج کے رشتہ دار کاروباری صحافی کے سفارش پر اتنے بڑے چور اور ملک دشمن کے پردہ پوشی کی آپ بھی کر رہے ہیں جنکی کہانیاں انٹرپول پر بھی ھے“

قرآة نے لکھا کہ ”قیامت کے دن بطور حکمران کئے گئے ایک ایک فیصلے کا حساب ہوگا..کیونکہ حکمرانی آسائش نہیں آزمائش ہے..

اور جو اپنی چاہ سے حکمرانی لیتا ہے اس کے لئے دوہری آزمائش ہے..“

مزید : قومی