کہاوت ہے کہ جتناکمزور کیس ہوتا ہے اتنا ہی اچھے وکیل آتے ہیں ،جسٹس اعجازالاحسن کے ریمارکس پر عدالت میں قہقہے

کہاوت ہے کہ جتناکمزور کیس ہوتا ہے اتنا ہی اچھے وکیل آتے ہیں ،جسٹس ...
کہاوت ہے کہ جتناکمزور کیس ہوتا ہے اتنا ہی اچھے وکیل آتے ہیں ،جسٹس اعجازالاحسن کے ریمارکس پر عدالت میں قہقہے

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)نجی یونیورسٹی کے لاہور کیمپس کی بندش سے متعلق کیس میں جسٹس اعجاز الاحسن کے ریمارکس پر کمرہ عدالت میں قہقہے لگ گئے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق سپریم کورٹ آف پاکستان میں نجی یونیورسٹی کے لاہور کیمپس کی بندش سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی،جسٹس عمر عطابندیال کی سربراہی میں بنچ نے کیس کی سماعت کی،دوران سماعت جسٹس عمر عطابندیال نے کہا کہ لگتا ہے ادارہ اچھا ہے بڑے وکیل مقدمے کی پیروی کیلئے آئے ہیں ،جسٹس اعجازالاحسن نے کہا کہ کہاوت ہے کہ جتناکمزور کیس ہوتا ہے اتنا ہی اچھے وکیل آتے ہیں ،جسٹس اعجازالاحسن کے ریمارکس پر کمرہ عدالت میں قہقہے لگ گئے،جسٹس اعجاز الاحسن نے کہاکہ معذرت کے ساتھ یونیورسٹی نے طلبا سے بڑا کھیل کھیلا،پہلے بھی ان کے مقدامات آئے ہیں۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد