عدالت کو مطمئن کریں کیسے سی ڈی اے کی زمین پرائیویٹ لوگوں کو دی گئی؟اسلام آبادہائیکورٹ نے علیم خان کی نجی ہاؤسنگ سوسائٹی پرتجاوزات کےخلاف درخواست تحریری جواب طلب کرلیا

عدالت کو مطمئن کریں کیسے سی ڈی اے کی زمین پرائیویٹ لوگوں کو دی گئی؟اسلام ...
عدالت کو مطمئن کریں کیسے سی ڈی اے کی زمین پرائیویٹ لوگوں کو دی گئی؟اسلام آبادہائیکورٹ نے علیم خان کی نجی ہاؤسنگ سوسائٹی پرتجاوزات کےخلاف درخواست تحریری جواب طلب کرلیا

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)اسلام آبادہائیکورٹ نے علیم خان کی نجی ہاؤسنگ سوسائٹی پرتجاوزات کےخلاف درخواست پرسی ڈی اے سے تحریری جواب طلب کرلیا،چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیئے ہیں کہ عدالت کو مطمئن کریں کہ کیسے سی ڈی اے کی زمین دی گئی،تفتیشی نے کہا کہ انویسٹی گیشن کے دوران یہ زمین سی ڈی اے کی ثابت ہوئی۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آبادہائیکورٹ میں پی ٹی آئی رہنما علیم خان کی نجی ہاو¿سنگ سوسائٹی پرتجاوزات کےخلاف درخواست پرسماعت ہوئی،اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے سماعت کی،سی ڈی اے کی خاتون لینڈ ڈائریکٹرعدالت کے روبرو پیش ہوگئیں،تفتیشی افسر نے عدالت میں بیان دیا کہ یہ سی ڈی اے کی زمین ہے۔

چیف جسٹس اسلام آبادہائیکورٹ نے استفسار کیا کہ پرائیویٹ لوگوں کوسی ڈی اے کی زمین کیسے دے دی گئی؟سی ڈی اے کی زمین غیرشفاف طریقے سے کیسے پرائیوٹ آدمی کو دی گئی؟۔

چیف جسٹس اسلام آبادہائیکورٹ نے استفسار کیا کہ اس زمین کو پرائیوٹ کمپنی کس طرح استعمال کر رہی ہے؟ڈائریکٹر سی ڈی اے نے کہاکہ اگرمیں اس فائل کو دیکھ لوں اس کے بعد عدالت کو جواب دے سکتی ہوں، چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ کس قانون کے تحت سی ڈی اے کی زمین دی گئی،درخواست گزارکا موقف ہے کہ دوسری پارٹی بہت بااثر ہے،دوسری پارٹی پر الزام ہے کہ وہ اثرو رسوخ سے زمین پر قابض ہے۔

چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ عدالت کو مطمئن کریں کہ کیسے سی ڈی اے کی زمین دی گئی،تفتیشی نے کہا کہ انویسٹی گیشن کے دوران یہ زمین سی ڈی اے کی ثابت ہوئی،عدالت نے سی ڈی اے سے تحریری جواب طلب کرلیا۔عدالت نے کیس کی مزید سماعت کل تک ملتوی کردی ۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد