خصوصی عدالت کو پرویز مشرف سنگین غداری کیس کا فیصلہ سنانے سے روکا جائے،وفاقی حکومت نے بھی اپیل کردی

خصوصی عدالت کو پرویز مشرف سنگین غداری کیس کا فیصلہ سنانے سے روکا جائے،وفاقی ...
خصوصی عدالت کو پرویز مشرف سنگین غداری کیس کا فیصلہ سنانے سے روکا جائے،وفاقی حکومت نے بھی اپیل کردی

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پرویز مشرف کے خلاف سنگین غدار کے کیس کا فیصلہ رکوانے کیلئے حکومت اور پرویز مشرف کے وکیل نے اسلام آباد ہائیکورٹ سے رجوع کرلیا۔

سلمان صفدر نے موقف اختیارکیا کہ مشرف سخت علالت کے باعث پیش نہیں ہوسکتے۔ کیس میں مجھے پرویز مشرف کادفاع کرنے کے حق سے محروم کیاگیا۔مشرف کو صفائی کا موقع ملنے تک سزا معطل کی جائے۔درخواست میں مزید کہا گیا کہ خصوصی عدالت کافیصلہ آئین کے آرٹیکل 4 اور 10 اے کی خلاف ورزی ہے۔

وزارت داخلہ کی جانب سے دائر درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ سنگین غداری کیس میں پرویزمشرف کے شریک ملزمان کوٹرائل میں شامل ہی نہیں کیا گیا۔وزارت داخلہ نے موقف اختیارکیا کہ پراسیکیوشن ٹیم کو23اکتوبرکوڈی نوٹیفائی کیامگر 24 اکتوبر کوبغیر اختیار کے مقدمے کی پیروی کی۔پراسیکیوشن ٹیم نے تحریری دلائل بھی جمع کرائے جس کااسے اختیارنہ تھا۔انیس نومبر دوہزار انیس کا خصوصی عدالت ا فیصلہ معطل کرکے فیصلہ دینے سے روکا جائے۔پرویز مشرف کے ساتھ قانون کے مطابق سلوک کیاجائے۔

واضح رہے کہ خصوصی عدالت نے انیس نومبر کو فیصلہ محفوظ کرتے ہوئے اٹھائیس نومبر کو فیصلہ سنا نے کا اعلان کیاتھا۔

مزید : اہم خبریں /قومی