عیسائی نَن کا معاشقہ منظر عام پر آنے کی وجہ سے گرجا گھر ہی بند کردیا گیا

عیسائی نَن کا معاشقہ منظر عام پر آنے کی وجہ سے گرجا گھر ہی بند کردیا گیا
عیسائی نَن کا معاشقہ منظر عام پر آنے کی وجہ سے گرجا گھر ہی بند کردیا گیا

  



روم(مانیٹرنگ ڈیسک) اٹلی میں مسیحی مذہبی خاتون کا معاشقہ منظرعام پر آنے کی وجہ سے تاریخی گرجا گھر ہی بند کر دیا گیا۔ میل آن لائن کے مطابق یہ40سالہ نن ’سسٹر ماریا‘ اٹلی کے علاقے توسکین ہلز ( Tuscan Hills) میں واقع 17وی صدی عیسوی کے ’کانوینٹ آف کیپوشینی فادرز‘ میں فرائض سرانجام دیتی تھی۔ تاہم چند ماہ قبل وہ گرجا گھر چھوڑ گئی تھی۔اس پر الزام عائد کیا گیا ہے کہ اس نے گرجا گھر میں فرائض کی انجام دہی کے دوران ایک مقامی شخص کے ساتھ تعلق قائم کیا اور پھر اس کے لیے گرجا گھر چھوڑ گئی۔

یہ بات سامنے آنے پر گرجا گھر کو ہی بند کر دیا گیا ہے۔ تاہم سسٹر ماریا نے مقامی اخبار سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ ”ان کی آنکھوں میں بھی آنسو ہیں اور میں بھی رو رہی ہوں، مگر میں انہیں بتانا چاہتی ہوں کہ گرجا گھر سے جانے کا میری محبت کے ساتھ کوئی تعلق نہیں ہے۔ وہ چاہتے ہیں کہ میں انہیں تمام کہانی سناﺅں۔ انہیں ایسا کرنے دو۔ یہ کہانی اس سے کہیں زیادہ پیچیدہ ہے جتنی ظاہری طور پر نظر آتی ہے۔ “

مزید : بین الاقوامی