تحریک انصاف سے آج تک ریلیف لیااور نہ ہی لینا ہے،حکومت نوازشریف کو علاج فراہم کرنے میں ناکام رہی:رانا محمد ارشد

 تحریک انصاف سے آج تک ریلیف لیااور نہ ہی لینا ہے،حکومت نوازشریف کو علاج ...
 تحریک انصاف سے آج تک ریلیف لیااور نہ ہی لینا ہے،حکومت نوازشریف کو علاج فراہم کرنے میں ناکام رہی:رانا محمد ارشد

  



ننکانہ صاحب(صباح نیوز)مسلم لیگ ن کےرہنمارانامحمدارشد نےکہاہےکہ ہم نےتحریکِ انصاف سےآج تک ریلیف لیااور نہ ہی لیناہے،حکومت نوازشریف کو علاج فراہم کرنے میں ناکام رہی،نوازشریف ایئر ایمبولینس پر لفٹر کے ذریعے سوار ہوئے،میانوالی میں عمران خان کی تقریر سن کر حیرانگی ہو رہی ہے،عمران خان کو خود علاج کی ضرورت ہے،میاں نوازشریف صاحب انشاء اللہ جلد صحت یاب ہو کر وطن واپس آئیں گے اور مقدمات کا سامنا کریں گے،2020الیکشن کا سال ہے۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے رانا محمد ارشد نے کہا کہ حکومت نان روٹی،آلو،پیاز اور اب ٹماٹر میں پھنسی ہوئی ہے،مہنگائی نے عام آدمی کیلئے جینا مشکل کر دیا ہے، گوشت تو دور کی بات سبزی اور ٹماٹر بھی اب عام آدمی  کی پہنچ سے دور ہو چکے ہیں،سبزیوں کی قیمتیں آسمان سے باتیں کر رہی ہیں،آئےروزٹیکسز اور بجلی کے بلوں نے زندگی گزارنا مشکل کر دیا ہے،وزیراعظم عمران خان اوروزیراعلیٰ عثمان بزدار نوازشریف کے منصوبوں پر اپنی تختیاں لگا کر عوام کو گمراہ نہیں کر سکتے،واربرٹن میں جس لیبر کالونی کا بار بار ذکر کرتے ہیں کہ ہم نے مزدوروں کو فری گھر دیے وہ منصوبہ خادم اعلیٰ پنجاب جناب شہبازشریف کے دور حکومت میں مکمل ہو چکا تھا ، اِنہوں نے ایک اینٹ بھی نہیں لگائی، اپنی تختی لگا کر جلسے جلوسوں میں لیبر کالونی اور موٹروے کے نعرے لگانے سے بہتر ہے عوام کو کوئی ریلیف دیں، مہنگائی پر کنٹرول کریں اور مسلم لیگ ن کے منصوبوں کو کاپی کرنے کی بجائے اپنا کوئی ایک نیا منصوبہ متعارف کروائیں،یوتھ لون،مزدوروں کو گھر، موٹر وے ، مرغیاں ، بابا گورونانک یونیورسٹی یہ تمام منصوبے مسلم لیگ ن کے ہیں،پاکستان کے سب سے بڑے صوبے کے وزیراعلیٰ کو ابھی ٹریننگ پر رکھاہوا ہے، وہ شریف انسان ہیں انکا کوئی قصور نہیں، عمران خان صاحب ان کو نمل یا شوکت خانم میں رکھ لیں۔

 رانا محمد ارشد نے کہا کہ سردار عثمان بزدار  2013سے2018تک مسلم  لیگ ن کے ٹکٹ ہولڈر تھے لیکن وہ عوام کو ڈلیور نہیں کر سکے، وہ خود اور اُنکی پارٹی کہتی ہے کہ وہ ٹریننگ پرہیں اوروہ سیکھ رہےہیں،اگروہ اتنےہی قابل اورشریف انسان ہیں تو خان صاحب اِنہیں نمل یونیورسٹی کاچیئرمین کیوں نہیں بنا دیتے؟خان صاحب اِنہیں شوکت خانم کے بورڈ آف ڈائریکٹرکا چیئرمین کیوں نہیں لگا دیتے؟وہ کبھی نہیں لگائیں گے کیوںکہ یہ خان صاحب کے ذاتی بزنس ہیں، عثمان بزدار صاحب کی شرافت اپنی جگہ مگران کے نیچے کرپشن عروج پر ہے،اِس کے ذمہ دار عثمان بزدار اور خودعمران خان صاحب ہیں۔اُنہوں نے کہا کہ عمران خان صاحب اور انکی گورنمنٹ کو چاہیے جو وعدے انہوں نے عوام سے کیے ہیں ان کو پورا کریں، تمام محکمے ہیلتھ،ایجوکیشن اور دیگر محکموں کو دیکھیں جو ملازمین کام اچھا کر رہے ہیں ان کو شاباش دیں اور جو کام نہیں کر رہے کام چور ہیں ان کیخلاف ایکشن لیں لیکن یہ کسی کو پوچھ نہیں سکتے لہٰذا یہی وجہ ہے کہ آج ڈاکٹرز ہڑتالوں پر ہیں،آج اساتذہ کرام ہڑتالوں پر ہیں،معذور افراد،کلیرکل اسٹاف اور چکی پر آٹاپیسنے والے بھی ہڑتالوں پر ہیں اور ان سب کے ذمہ دار عثمان بزدار صاحب ہیں۔کاش کہ وہ اپنے آپ کو پنجاب کا خادم اعلیٰ بناتے، ڈیلیور کرتے،قوم کیساتھ کوشش کرتے محنت کرتے سو فیصد نہیں تو کم از کم 80فیصد کامیابی تو ملتی۔

مزید : علاقائی /پنجاب /ننکانہ صاحب