کمرشل پراپرٹی ٹیکس، تاجروں اور حکومت میں سمجھوتہ!

کمرشل پراپرٹی ٹیکس، تاجروں اور حکومت میں سمجھوتہ!

  

یہ خبر بہت ہی خوش آئند ہے کہ حکومت پنجاب اور تاجر برادری کے درمیان کمرشل پراپرٹی ٹیکس کے تنازعہ پر سمجھوتہ ہو گیا ہے،اور اب تاجر برادری30نومبر والا دھرنا ملتوی کر دے گی۔تاجر برادری کا یہ احتجاج کمرشل پراپرٹی ٹیکس میں تین گنا اضافے کے خلاف کیا جا رہا تھا،حکومت نے یکایک پراپرٹی ٹیکس کی شرح87فیصد سے بڑھا کر 300فیصد تک کر دی تھی،اور بروقت ٹیکس کی ادائیگی پر دی جانے والی دس فیصد کی رعایت بھی واپس لے لی تھی۔ تاجر برادری نے علامتی ہڑتال سے احتجاج شروع کیا۔ مظاہرے کئے اور اب30نومبر کو دھرنا دیا جانا تھا،تاہم اس دوران صوبائی حکومت نے حالات کا جائزہ لے کر مذاکرات کئے اور اب کمرشل پراپرٹی ٹیکس میں اضافے کا فیصلہ واپس لے لیا گیا۔دس فیصد رعایت بحال کر دی جائے گی،گذشتہ31 اگست کی آخری تاریخ بڑھا کر 31دسمبر کر دی گئی ہے،اور یہ بھی طے پایا ہے کہ جو  تاجر 31اگست کی متعینہ تاریخ کے حوالے سے نئی شرح کے نوٹسوں والی رقم جمع کرا چکے،ان کی اضافی ادائیگی نئے سال میں منہا کر دی جائے گی۔یوں ایک بڑا احتجاج مذاکرات کے ذریعے ختم ہو گیا، حکومت کا یہ فیصلہ تعریف کے قابل ہے،کہ تاجر برادری بھی معیشت سنبھالنے میں اہم کردار کی حامل ہے۔

مزید :

رائے -اداریہ -