جنوری سے ستمبر تک: چین، پاکستان ایگریکلچر ٹریڈ کا حجم 860ملین ڈالر تک پہنچ گیا، چینی سفیر 

  جنوری سے ستمبر تک: چین، پاکستان ایگریکلچر ٹریڈ کا حجم 860ملین ڈالر تک پہنچ ...

  

 اسلام آباد(آئی این پی) پاکستان میں چین کے سفیر نونگ رونگ نے کہا ہے کہ رواں سال جنوری سے ستمبر تک چین پاکستان ایگریکلچر ٹریڈ کا حجم 860ملین   ڈالر پر پہنچ گیا، گزشتہ سال کووڈ19 کے باوجود دو طرفہ ایگریکلچر ٹریڈ کا حجم 717ملین ڈالر کے ساتھ بلند پر رہا،سی پیک  اعلی معیار کی ترقی کے ایک نئے مرحلے میں داخل ہو گیا ہے، اس میں صنعتی اور زرعی تعاون پر توجہ مرکوز ہے،حالیہ برسوں میں، چین پاکستان کے درمیان ایگریکلچر ٹرید تیزی سے بڑھ رہی ہے۔گوادر پرو کے مطابق چین اور پاکستان کے درمیان  پاکستان سے چین کو پیاز کی برآمد کیلئے معائنہ اور قرنطینہ کی ضروریات کے مسودے پر دستخط ہو گئے۔ معاہدے سے پاکستانی پیاز پروڈیوسر چینی مارکیٹ تک رسائی حاصل کر سکیں گے۔ گوادر پروکے مطابق اسلام آباد میں منعقدہ ایک تقریب کے دوران چین کے سفیر نونگ رونگ اور پاکستان کے وفاقی وزیر برائے فوڈ سیکیورٹی  اینڈ ریسرچ  سید فخر امام نے معاہدے پر دستخط کیے۔ اس موقع پر چین کے سفیرنونگ رونگ نے کہا آج ہم نے پیاز کے حوالے سے باضابطہ طور پر مسودے پر دستخط کیے ہیں اور ہم اب بھی پاکستانی برآمد کنندگان کی مرچ، آلو اور دیگر زرعی مصنوعات کے معائنہ اور قرنطینہ میں مدد کرنے کیلئے تیار ہیں تاکہ وہ چینی منڈیوں تک رسائی حاصل کر سکیں۔ انہوں نے کہا کہ مقامی کسانوں کووزارت فوڈ سیکیورٹی اینڈ ریسرچ کی طرف سے مدد اور رہنمائی فراہم کی جا سکتی ہے، انہوں نے مزید کہا چینی سفارت خانہ پیاز کی برآمد میں مدد کے لیے بھی مدد فراہم کرتا ہے۔ اس موقع پرسید فخر امام نے کہا مجھے یقین ہے کہ مزید پاکستانی اعلی معیار کی زرعی مصنوعات بڑی مقدار میں چینی منڈیوں تک رسائی حاصل کریں گی۔سید فخر امام  نے کہا کہ چین عالمی سطح پر خرید سکتا ہے،امید ہے کہ ہماری ایگریکلچر کمیونٹی  اور ہمارے لوگ چینی لوگوں کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے ان معیارات کو حاصل کر سکیں گے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں آم، سنگترے کی ریکارڈ برآمدات ہیں اور اس میں گلگت بلتستان اور بلوچستان میں نامیاتی چیری اگائی جاتی ہے، انہوں نے مزید کہا کہ یہ کسی حد تک مخصوص پھل ہیں، جن کی چین کو برآمد کی بڑی صلاحیت ہے۔سفیر نونگ رونگ نے جون 2021میں پاکستان سے پیاز درآمد کرنے کی تجویز پیش کی تھی جس کی وجہ سے دونوں ممالک کے درمیان مفاہمت کی یادداشت پر دستخط ہوئے۔ دونوں ممالک نے مختصر مدت میں پیاز کی تجارت کو لاگو کرنے کے لیے کوششیں تیز کرنے پر اتفاق کیا ہے۔

چینی سفیر 

مزید :

صفحہ آخر -