بداخلاقی کیس:پولیس کامک مکا،بچی کاوالدانصاف کیلئے دربدر

 بداخلاقی کیس:پولیس کامک مکا،بچی کاوالدانصاف کیلئے دربدر

  

 رحیم یارخان (بیورو رپورٹ)معذور بچی کیساتھ بداخلاقی کیس میں ملزمان تاحال پولیس کے رحم و کرم پر آزاد ہیں۔ورثا کو ملزمان کی جانب سے سنگین نتائج کی دھمکیاں دی جارہی ہیں۔تفصیل کے مطابق چار ماہ قبل بداخلاقی کا شکار ہونے والی موضع رنگ پور کی رہائشی معذور بچی کو تھانہ رکن پور کی پولیس نے انصاف تو کیا دینا تھا الٹا خوار کرنے میں کوئی کسر نہ چھوڑی۔با اثر(بقیہ نمبر6صفحہ6پر)

 ملزمان سے مبینہ مال کی  ہوس نے رکھوالوں کے ضمیر مردہ کر ڈالے۔ ڈین این رپورٹ آنے کے بعد بھی پولیس ریکارڈ عدالت میں پیش نہ کر سکی۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے معذور بچی کے والد عبدالغفور نے کہا کہ پولیس کو کافی دن قبل ڈی این اے رپورٹ فرانزک سائنس ایجنسی سے موصول ہو گئی تھی مگر پھر بھی پولیس نے ضمنی نہ لکھی اور میری بچی کی زندگی برباد کرنے والے بااثر ملزمان سے پہلے بھی مک مکا کر کے دو مرتبہ گرفتار نہیں کیا اور ایک مرتبہ گرفتار کر کے چھوڑ چکی ہے۔پولیس ملزمان سے مزید کاغذی چمک کا مطالبہ کر رہی ہے۔ جب ہم نے ڈین این رپورٹ کی فوٹو کاپی مانگی تو رکن پور پولیس کا کہنا تھا کہ جا پہلے عدالت سے آرڈر لیکر آ جب ہم عدالتی آرڈر لے آئے تو پولیس نے کہا کہ "جناب سرکار وڈے صاحب 4 دن کی چھٹی پر ہیں " ڈی این اے رپورٹ ہمارے حق میں ہے یا نہیں مگر ہمیں تو دیں۔میری ڈی پی او کیپٹن(ر)علی ضیا سے اپیل ہے کہ روز کھلی کچہری لگاتے ہیں آج رکن پور تھانہ کے مکمل سٹاف کی میڈیا کے سامنے کھلی کچہری لگا کر رحیم یارخان میں تاریخ رقم کریں اور سب کے سامنے ڈی این اے رپورٹ کی ضمنی لکھوا کر پولیس ریکارڈ کو مکمل کروائیں اور  بداخلاقی کے ملزموں کو سزا دلوائیں۔

 بداخلاقی کیس

مزید :

ملتان صفحہ آخر -