مرغی کے گوشت کی قیمت تعین کیس، وفاق کے وکیل کو2دسمبر تک مہلت

  مرغی کے گوشت کی قیمت تعین کیس، وفاق کے وکیل کو2دسمبر تک مہلت

  

 لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورت کے مسٹرجسٹس ساجد محمود سیٹھی نے مرغی کے گوشت کی قیمتیں مقرر کرنے کے لئے دائر درخواست پر وفاقی حکومت کے وکیل کی جانب سے رپورٹ داخل کرانے کے لئے مہلت کی استدعا پرمزید سماعت2دسمبر تک (بقیہ نمبر53صفحہ6پر)

ملتوی کرتے ہوئے قیمتوں کے تعین کا میکنزم بنا کر عدالت پیش کرنے کی ہدایت کردی،عدالت نے برائلر فارمر ایسوسی ایشن پنجاب کی فریق بننے کی درخواست بھی منظور کرلی ہے،کیس کی سماعت شروع ہوئی تو سرکاری وکیل نے عدالت کوبتایا کہ سیکرٹری انڈسٹریز کی زیر صدارت قیمتوں کے تعین کے لئے اجلاس ہوا،انڈوں، مرغی کے گوشت ودیگر کی قیمت کے تعین کیلئے کارروائی جاری ہے، دوران سماعت برائلر فارمر ایسوسی ایشن پنجاب کی جانب سے مسرور احمد خان ایڈووکیٹ نے موقف اختیارکیا کہ پولٹری پراڈکٹس کو پہلی بار لازمی خوراک زمرے میں شامل کیا گیا،اصل متاثرین تو ہم ہیں عدالت ہمارا بھی موقف سنیں،برائلر ٹریڈرز کا منافع چکن پر آٹھ روپے فکس ہے، مرغی کے گوشت کی قیمتیں ازخود مقرر کی جاتی ہیں،من مانے ریٹ مقرر کرکے ناجائز منافع کمایا جارہا ہے،درخواست گزار کا موقف ہے کہ ٹریڈرز اور دکانداروں کو قیمتوں کے تعین میں دخل اندازی سے روکاجائے۔

 مرغی گوشت

مزید :

ملتان صفحہ آخر -