سعودی عرب کا سفری پابندیاں ہٹانے کا اعلان ، علامہ طاہر اشرفی بھی میدان میں آ گئے ،پی آئی اے نے بھی بڑا اعلان کردیا 

سعودی عرب کا سفری پابندیاں ہٹانے کا اعلان ، علامہ طاہر اشرفی بھی میدان میں آ ...
سعودی عرب کا سفری پابندیاں ہٹانے کا اعلان ، علامہ طاہر اشرفی بھی میدان میں آ گئے ،پی آئی اے نے بھی بڑا اعلان کردیا 

  

 اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )پاکستان سے سعودی عرب جانے والے افراد کیلئے اچھی خبر سامنے آئی ہے، سعودیہ نے پاکستانی شہریوں کو براہ راست ملک میں آنے کی اجازت دے دی ہے,وزیراعظم کے معاون خصوصی علامہ طاہر محمود اشرفی نے اس فیصلے پر مسرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی عرب کی وزارت داخلہ اور قیادت کے فیصلے کاشکریہ ادا کرتے ہیں، سعودی عرب واپسی کے منتظر ہزاروں پاکستانی اب براہ راست سعودی عرب جا سکیں گے۔دوسری طرف وفاقی وزیراطلاعات چوہدری فواد حسین نے مائیکرو بلاگنگ ویب سائیٹ پر اپنے ٹویٹ میں عوام کو خوشخبری سناتے ہوئے کہاکہ آج تین اچھی خبریں ہیں ،ایک یہ کہ پٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن نے ہڑتال ختم کر دی ہے ،دوسراسعودی عرب نے پاکستان سے براہ راست فلائٹس شروع کرنے کا اعلان کر دیا ہے ، سعودی عرب سے تین ارب ڈالر کی ٹرانسفر میں تمام قانونی معاملات طے ہوگئے اور یہ ڈالر اس ہفتے پاکستان کو مل جائینگے۔ 

یاد رہے کہ سعودی وزارت داخلہ نے کہاہے کہ سفری پابندیوں میں شامل ممالک میں سے پاکستان سمیت مزید چھ ممالک کے مسافروں کو براہ راست مملکت آنے کی اجازت دے دی گئی ہے۔ سعودی خبر رساں ادارے کے مطابق پاکستان، انڈیا، انڈونیشیا، برازیل، مصر اور ویتنام سے آنے والوں کو اب کسی دوسرے ملک میں 14 دن قیام کرنے کی ضرورت نہیں ہوگی اور وہ براہ راست سعودی عرب کا سفر کر سکیں گے۔

سعودی وزارت داخلہ کی جانب سے جاری بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ کورونا وائرس کے حوالے سے احتیاطی تدابیر کے سبب پاکستان اوربھارت سمیت انڈونیشیا، ویتنام، مصر اور برازیل سے ایسے مسافروں، جنہوں نے مملکت میں ویکسین کی دونوں خوراکیں نہیں لگوائی تھیں، کو براہ راست مملکت آنے کی اجازت نہیں تھی۔پاکستان سمیت مذکورہ ممالک سے آنے والے مسافروں کو یکم دسمبر 2021ءبروز بدھ سے براہ راست مملکت آنے کی اجازت ہوگی۔

سعودی وزارت داخلہ کی جانب سے جاری بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ مذکورہ ممالک سے آنے والے مسافروں کو پانچ دن قرنطینہ میں گزارنے ہوں گے اس سے قطع نذر کہ انہوں نے اپنے ممالک میں کورونا ویکسین لگوائی ہو، تمام مسافروں کو مقررہ ضوابط کی پابندی کرنا ہوگی۔واضح رہے بیرون مملکت سے آنے والوں کو زیادہ سے زیادہ 72 گھنٹے قبل منظور شدہ لیبارٹری سے پی سی آر ٹیسٹ کرانا ہوگا جس کی رپورٹ متعلقہ ادارے کو فراہم کی جائے گی۔ مملکت آنے والے مسافروں کو پانچ دن کےلئے ہوٹل قرنطینہ میں قیام کرنا ضروری ہوگا اور پانچویں دن انہیں مزید کورونا ٹیسٹ کرانا ہوگا جس کی رپورٹ منفی آنے پر انہیں قرنطینہ کی پابندی سے استثنی دیا جائے گا ۔مذکورہ ممالک سے آنے والے مسافروں کو مملکت آنے کے بعد یہاں فراہم کی جانے والی کورونا ویکسین کی بوسٹر ڈوز لگائی جائے گی۔ ضوابط کے تحت لازمی ہے کہ مملکت پہنچنے سے قبل وزارت داخلہ کے ڈیجیٹل پلیٹ فارم ابشر کے قدوم پورٹل پر رجسٹرکرایا جائے جس میں ویکسین کی تفصیلات درج ہونا چائیں جن میں ویکسین یافتہ اور غیر ویکسین یافتہ کی وضاحت کی جاتی ہے۔

دوسری طرف پاکستان کی قومی ایئرلائن پی آئی اے نے کہا ہے کہ وہ پروازیں چلانے کے لیے تیار ہیں، جیسے ہی اعلان کی تحریری صورت سامنے آتی ہے بکنگ شروع کر دی جائے گی۔

خیال رہے کہ اس سے قبل سعودی عرب نے پاکستان سمیت دیگر ممالک کے شہریوں پر یہ پابندی عائد کی تھی کہ اگر وہ مملکت میں آنا چاہتے ہیں تو کسی تیسرے ملک میں 14 روزہ قرنطینہ مکمل کریں۔

مزید :

قومی -