اتفاق رائے سے فوجی قیادت کا تقرر،   ملک بھر میں مسرت کی لہر

        اتفاق رائے سے فوجی قیادت کا تقرر،   ملک بھر میں مسرت کی لہر

  

       اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)  صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے جنرل عاصم منیر کی بطورِ آرمی چیف جبکہ جنرل ساحر شمشاد مرزا کی بطورِ چیئر مین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی کی تعیناتی کی سمری پر دستخط کر دیئے ہیں۔ اس طرح جنرل عاصم منیر ملک کے 17 ویں آرمی چیف تعینات۔ہو گئے جبکہ جنرل ساحر شمشاد مرزا نئے چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی ہو گئے، ایوان صدر کی جانب سے چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی اور آرمی چیف کی تعیناتیوں کی منظوری کا نوٹیفکیشن جاری کردیا گیا جس میں کہا گیا لیفٹیننٹ جنرل عاصم منیر کی فی الفور جنرل کے عہدے پر ترقی دینے کی منظوری صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے دیدی۔ سید عاصم منیر چیف آف آرمی سٹاف تعینات ہونگے، ان کے بطور چیف آف آرمی سٹاف کی تعیناتی کا اطلاق 29نومبر 2022سے ہو گا۔ نوٹیفکیشن میں کہا گیا صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے جنرل ساحرشمشاد کو بطور چیئرمین جوا ئنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی تعینات کرنے کی بھی منظوری دیدی، ان کے بطور چیئرمین جے سی ایس سی تعیناتی کا اطلاق 27نومبر 2022سے ہو گا۔ اس سے قبل وزیراعظم شہباز شریف نے لیفٹیننٹ جنرل عاصم مینر کو فور سٹار جنرل کے عہدے پر ترقی دیتے ہوئے نیا چیف آف آرمی سٹاف مقرر کرنے کا فیصلہ کیا اور نئے آرمی چیف کی تعیناتی سے متعلق سمری صدرِ مملکت ڈاکٹر عارف علوی کو ارسال کی۔ دوسری جانب لیفٹیننٹ جنرل ساحر شمشاد مرزا کو بھی فور سٹار جنرل کے عہدے پر ترقی دیتے ہوئے انہیں چیئرمین جوائنٹ چیف آف سٹاف کمیٹی مقرر کرنے کا فیصلہ کیا اور تعیناتی کی سمری منظوری کیلئے صدر مملکت کو بھجوائی۔ قبل ازیں وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب کی جانب سے مائیکرو بلاگنگ سائٹ ٹوئٹر پر پاک فوج کے اعلی عہدوں کی تعیناتی سے متعلق بیان جاری کیا گیا، جس میں انہوں نے کہا وزیراعظم شہباز شریف نے آئینی اختیار استعمال کرتے ہوئے جنرل عاصم منیر کو نیا آرمی چیف جبکہ لیفٹیننٹ جنرل ساحر شمشاد مرزا کو چئیرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف مقرر کرنے کا فیصلہ کیا، جبکہ سمری منظوری کیلئے صدر مملکت کو ارسال کر دی گئی۔ وزیر اعظم کی طرف سے دونوں سمریاں ایوان صدر میں موصول ہونے کے بعد اسلام آباد سے لاہور جاکر چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کیساتھ ملاقات کی نئی تقرریوں پر انہیں اعتماد میں لیا اس موقع پر پی ٹی آئی چیئر مین نے صدر علوی کو کہا کہ آرمی چیف کی تقرری پر سمری کو آئین اور قانون کے مطابق دیکھیں۔ اگر سمری درست ہے تو اْس معاملے پر آگے بڑھیں۔ ہم نے آئین اور قانون کی پاسداری کرنی ہے۔ ہماری کسی ادارے سے کوئی جنگ نہیں۔ جس کے بعد صدر عارف علوی واپس اسلام آباد ایوان صدر پہنچے اور دونوں سمریوں پر دستخط کر دئے، بعد ازاں) نئے آرمی چیف جنرل عاصم منیر اور چئیرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی جنرل ساحر شمشاد مرزا    نے  جمعرات کو وزیر اعظم ہاؤس  میں وزیر اعظم شہباز شریف  اور ایوان صدر میں صدر مملکت سے الگ الگ ملاقاتیں کیں۔ ذرائع کے مطابق  وزیر اعظم نے جنرل ساحر شمشاد مرزا کو چئیرمین جوائنٹ چیفس سٹاف کمیٹی اور جنرل عاصم منیر کو آرمی چیف مقرر ہونے پرمبارکباد دی۔دونوں فوجی افسران نے ان پر اعتماد کرنے پر وزیر اعظم کا شکریہ ادا کیا۔  ملاقات میں افواج پاکستان کے پیشہ وارانہ امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ وزیر اعظم کا کہناتھا کہ مجھے پورا یقین ہے کہ آپ کی قیادت میں پاکستان کا دفاع مزید مستحکم ہو گا۔وزیر اعظم نے وطن کے دفاع کے لئے قربانیاں دینے والے فوجی افسران اور جوانوں کو خراج عقیدت پیش کیا۔ وزیر اعظم کا کہناتھا  آپ کی اعلی پیشہ وارانہ اور آپریشنل صلاحیتوں کو سامنے رکھتے ہوئے آپ کا انتخاب کیا گیا۔ نئے آرمی چیف جنرل عاصم منیر اور   چئیر مین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف  ساحر شمشاد مرز نے  ایوان صدر میں  صدر عارف علوی سے ملاقات کی۔ ذرائع کے مطابق صدر مملکت کی جانب سے   افواج پاکستان  میں تقرریوں کی سمری  پر دستخط کے بعد  جنرل عاصم منیر   ایوان صدر پہنچے جہاں صدر عارف علوی سے ملاقات۔صدر مملکت  نے جنرل عاصم منیر کو آرمی چیف تعینات ہونے پر مبارکباد دی۔جنرل عاصم منیر نے صدر کا شکریہ ادا کیا۔ملاقات میں  افواج پاکستان کے پیشہ ورانہ امور پر بھی ملاقات میں تبادلہ خیال کیا گیا  وزیراعظم شہباز شریف  نے کہاہے کہ  افواج پاکستان میں اہم تقرری کا فیصلہ دباو کے باوجود میرٹ پر کیا۔ اپنے ایک انٹرویو میں وزیر اعظم نے کہا سنیارٹی کے اصولوں پر فیصلہ ملک کے استحکام کا باعث بنے گا۔سنیارٹی کا اصول اداروں کو مضبوط بناتا ہے۔ معاشی مضبوطی کے لیے نیشنل ڈائیلاگ کی تجویز پر قائم ہوں۔ معاشی مضبوطی ہماری اولین ترجیح ہے۔ملک میں انتشار اور افراتفری کی گنجائش نہیں۔  وزیر دفاع خواجہ آصف  نے کہا ہے کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا پیغام نیک شگون ہے۔میڈیا سے گفتگو میں وزیر دفاع خواجہ آصف نے کہا کہ صدر مملکت نے سمری پر دستخط کر دیے ہیں جو خوش آئند اقدام ہے۔خواجہ آصف نے کہا کہ جنرل قمر جاوید باجوہ کا پیغام نیک شگون ہے، تمام ادارے آئین اور قانون کے مطابق چلنے چاہئیں۔انہوں نے کہا کہ ملک میں ہیجانی کیفیت پیدا ہوئی تھی، سیاست دان اپنے طرز عمل کو آئین اور قانون کے مطابق لے آئیں۔

تعیناتیاں 

مزید :

صفحہ اول -