ہائیکورٹ نے وفاقی،پنجاب حکومت‘آئی جی سے جواب طلب کرلیا

 ہائیکورٹ نے وفاقی،پنجاب حکومت‘آئی جی سے جواب طلب کرلیا

  

لاہور(نامہ نگار)لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس شاہد کریم نے 26نومبر کو پی ٹی آئی کے راولپنڈی میں لانگ مارچ پر ممکنہ شیلنگ رکوانے کے لئے دائر درخواست پروفاقی حکومت،حکومت پنجاب اور آئی جی پنجاب سے جواب طلب کرلیا درخواست میں وفاقی وزارت داخلہ، چیف سیکرٹری پنجاب،سیکرٹری داخلہ پنجاب،آئی جی پنجاب اور سیکرٹری ماحولیات کو فریق بنایا گیا درخواست گزار خاتون شیریں نواز کے وکیل اظہر صدیق نے موقف اختیارکیا کہ میڈیارپورٹس کے مطابق وفاقی حکومت نے  50ہزار آنسو گیس کے شیل فورس کو فراہم کردیئے ہیں آنسوگیس شیل استعمال ہونے پرانسانی جانوں اور ماحول کو شدید خطرات لاحق ہوں گے،اطلاع کے مطابق وفاقی حکومت نے پولیس کوزہریلی آنسو گیس استعمال کرنے کی اجازت دے دی ہے،آنسو گیس انسانی صحت کیلئے مضر ترین ہے، 4 نومبر کو بھی شہریوں کو نشانہ بنایا گیا آنسو گیس کے اثرات فضا میں دہائیوں تک رہتے ہیں، لیگ آف نیشنز، جنیوا معاہدے اور کیمیکل ویپن کنونشن 1993 کے تحت بھی آنسو گیس کا استعمال نہیں کیا جا سکتا، کوئی بھی قانون آنسو گیس کے استعمال کی اجازت نہیں دیتا، اقوام متحدہ بھی آنسو گیس کو جنگی ہتھیار قرار دے چکی ہے، پولیس اورقانون نافذ کرنے والے ادارے شہریوں کے جان و مال کے محافظ ہونے کے باوجود کیسے شہریوں پر اتنی خطرناک گیس استعمال کر سکتے ہیں،عدالت سے استدعاہے کہ پولیس اور قانون نافذ کرنے والے دیگر اداروں کو تحریک انصاف کے 26 نومبر کے حقیقی آزادی مارچ پر ممکنہ آنسو گیس کی شیلنگ سے روکنے کا حکم دیا جائے۔

شیلنگ رکوانے

مزید :

صفحہ آخر -