’میں نے تمہارا کاﺅنٹ ہیک کرلیا ہے اور تمہاری فحش ویڈیوز دنیا کو دکھادوں گا اگر۔۔۔‘ نوجوان لڑکی کو پیغام موصول، اس کے بعد اُس نے کیا کیا؟ ہیکر نے خوابوں میں بھی نہ سوچاہوگا، انٹرنیٹ پر تہلکہ برپاہوگیا

’میں نے تمہارا کاﺅنٹ ہیک کرلیا ہے اور تمہاری فحش ویڈیوز دنیا کو دکھادوں گا ...
’میں نے تمہارا کاﺅنٹ ہیک کرلیا ہے اور تمہاری فحش ویڈیوز دنیا کو دکھادوں گا اگر۔۔۔‘ نوجوان لڑکی کو پیغام موصول، اس کے بعد اُس نے کیا کیا؟ ہیکر نے خوابوں میں بھی نہ سوچاہوگا، انٹرنیٹ پر تہلکہ برپاہوگیا

  


نئی دلی (نیوز ڈیسک) انٹرنیٹ جس طرح عام لوگوں کی زندگی کا لازمی حصہ بن چکا ہے اسی طرح جرائم پیشہ افراد نے بھی اسے بطور ہتھیار استعمال کرنا شروع کردیا ہے، جس کے زریعے انٹرنیٹ صارفین کے سوشل میڈیا اکاﺅنٹ ہیک کر کے انہیں بلیک میل کیا جاتا ہے۔ یہ شیطان صفت مجرم عموماً نوعمر لڑکیوں اور خواتین کو نشانہ بناتے ہیں، جن میں سے اکثر بدنامی کے ڈر سے ان کے ناجائز مطالبات پورے کرنے پر مجبور ہوجاتی ہیں، تاہم ایک نوجوان بھارتی لڑکی کو جب اسی طرح کی بلیک میلنگ کا سامنا کرنا پڑا تو وہ ہمت کا مظاہرہ کرتے ہوئے ڈٹ کر کھڑی ہوگئی، بلکہ بلیک میلر کی تلاش کے لئے انٹرنیٹ صارفین سے مدد کی اپیل بھی کر دی۔

انڈیا ٹوڈے کی رپورٹ کے مطابق تارونا اسوانی نامی لڑکی کو کسی نامعلوم شخص کی جانب سے ای میل موصول ہوئی جس میں لکھا تھا ”میں نے تمہارے تمام سوشل میڈیا پر موجود دوستوں اور فیملی کے لوگوں کی معلومات حاصل کرلی ہیں اور میرے پاس تمہارے ای میل اکاﺅنٹ کی تمام معلومات بھی موجود ہیں۔ میں تمہاری تصویریں اور ویڈیوز ان تمام لوگوں کو بھیج سکتا ہوں، جسے دیکھ کر تو کچھ لوگ خوش ہوں گے لیکن کچھ بہت شرمندہ ہوں گے۔ مجھے خاموش رکھنے کا ایک ہی طریقہ ہے کہ مجھے خوش رکھو۔“

ریپ کا مجرم گیارہ سالہ بچہ اس فعل سے پہلے انٹرنیٹ پر کیا سرچ کرتا رہا،جان کر تمام والدین پریشان ہو جائیں

تارونا نے یہ دھمکی آمیز ای میل دیکھی تو ہتھیار ڈالنے کی بجائے بہادری کا ثبوت دیتے ہوئے سارا معاملہ فیس بک پر پوسٹ کر دیا۔ انہوں نے لکھا ”ڈیئر فرینڈز اینڈ فیملی، میں یہ پوسٹ آپ سب لوگوں کو کررہی ہوں کیونکہ میری آن لائن آئی ڈی چرالی گئی ہے ۔ پچھلے 24 گھنٹوں میں مجھے دی ای میلز آچکی ہیں جن میں کوئی نامعلوم شخص کہہ رہا ہے کہ وہ مجھے جانتا ہے اور میرے گوگل اکاﺅنٹ کی ہیکنگ کرچکا ہے۔ اس کا کہنا ہے کہ وہ میری کچھ تصاویر اور ویڈیوز میرے تمام فرینڈز اور فیملی کو بھیج دے گا۔ اگرچہ اس مواد کو پوسٹ کیا جانا میرے لئے باعث شرمندگی ثابت ہوسکتا ہے لیکن میں اس کی دھمکیوں کے آگے جھکنے کی بجائے کھڑی ہوگئی ہوں، تاکہ ایسی صورتحال کا شکار ہونے والی دیگر خواتین بھی ایسے مجرموں سے ڈرنے کی بجائے ہمت سے کام لیں۔ میری آپ سے اپیل ہے کہ میری اس پوسٹ کو زیادہ سے زیادہ شیئر کریں کیونکہ ہوسکتا ہے کہ کوئی شخص اس مجرم تک پہنچنے میں مدد کرسکے۔ براہ کرم اس ذہنی بیمار اور گمراہ شخص کو پکڑنے میں میری مدد کریں۔“

تارونا کی یہ پوسٹ سامنے آتے ہی انٹرنیٹ صارفین نے اسے بڑے پیمانے پر شیئر کرنا شروع کردیا۔ ہزاروں افراد نے پوسٹ شئیر کی تو پولیس بھی خبردار ہو گئی اور اب قانون نافذ کرنے والے متعدد ادارے بھی تارونا کا اکاﺅنٹ ہیک کرنے اور دھمکیاں دینے والے مجرم کا سراغ لگارہے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...