بیٹی کے قاتل سفاک باپ کو سزائے موت اور5لاکھ روپے جرمانے کی سزا

بیٹی کے قاتل سفاک باپ کو سزائے موت اور5لاکھ روپے جرمانے کی سزا

لاہور(نامہ نگار)سیشن عدالت نے گول روٹی نہ پکانے پر اپنی بیٹی کو ڈنڈے مار کرقتل کرنے والے سفاک باپ کوسزائے موت اور 5لاکھ روپے جرمانے کی سزا کا حکم سنا دیا ہے جبکہ مجرم کو اپنی بیٹی کی لاش غائب کرنے پر مزید5سال قید کی سزاالگ سے بھگتنا پڑے گی ۔ایڈیشنل سیشن جج اصغر خان کی عدالت میں تھانہ شادباغ پولیس نے خالد محمود کے خلاف بیٹی انیقہ کو گول روٹی نہ پکانے پرہلاک کرنے کے الزام میں چالان پیش کررکھا تھا،یہ مقدمہ خالد محمود کی بیوی نائلہ فردوس نے 2015ء میں اپنے شوہر کے خلاف درج کروایا تھا جس میں اس نے خاوند پر الزام عائدکیاتھا کہ اس نے بیٹی کو صرف اس بنا پر ڈنڈے مار کر زخمی کردیا کہ وہ گول روٹی نہیں پکاتی ،زیادہ تشدد سے اس کی بچی انیقہ موقع پر ہی دم توڑ گئی تھی بعد میں اس نے لاش کو چھپانے کی کوشش کی اور لاش کو بھی دورپھینک آیا جبکہ اس کے شوہر نے اس کے بیٹے ابوذر کو بھی مارنے کی دھمکی دی۔

اور اس سے لاش اٹھانے میں مدد لی ،مقدمہ کے بعد پولیس نے خالد محمود کو گرفتار کرلیا ،چالان عدالت میں پیش ہونے پر ماں نائلہ نے بیٹے ابوذر کو بے گناہ قرار دیتے ہوئے معاف کردیا ،دوران سماعت وکیل ندیم نے بتایا کہ ابوذر باپ کے خوف کی وجہ سے اس کے ساتھ گیا تھا تاہم نائلہ کے معاف کرنے پر ابوذر کو کیس سے الگ کردیا گیا۔

،باپ خالد محمود کا کیس عدالت میں زیرسماعت رہا اوراس کی اولاد نے بھی باپ کے خلاف بیانات قلمبند کرائے ،عدالت نے گزشتہ روزبیانات اور وکلا کے دلائل کے بعد مجرم خالد محمود پر جرم ثابت ہونے پر اسے مذکورہ بالا سزاؤں کا حکم سنا دیا ہے

مزید : میٹروپولیٹن 4