عمران خان نے ’’رشتہ مانگنے ‘‘ کے بیان پر طاہر القادری سے معذرت کر لی

عمران خان نے ’’رشتہ مانگنے ‘‘ کے بیان پر طاہر القادری سے معذرت کر لی

لاہور( این این آئی )پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری نے تحریک انصاف کے 2نومبر کو اسلام آباد دھرنے میں شرکت کی دعوت قبول کر لی ہے،عمران خان نے ڈاکٹر طاہر القادری کو ٹیلیفون کر کے احتجاج میں شرکت کی باضابطہ دعوت دی ،سربراہ عوامی تحریک نے اپنی جماعت کو دھرنے میں شرکت کی تیاری کرنے کی ہدایات بھی جاری کر دیں تاہم اپنی شرکت کا فیصلہ مشاورت کے بعد آئندہ چند روز روز میں کریں گے۔ تحریک انصاف کے ترجمان کے مطابق پارٹی سربراہ عمران خان نے عوامی تحریک کے قائد ڈاکٹر طاہر القادری کو فون کر کے اسلام آباد کے دھرنے میں شرکت کی باضابطہ دعوت دی ۔ تحریک انصاف کے مطابق ڈاکٹر طاہر القادری نے دھرنے میں شرکت کی دعوت قبول کر لی ہے ۔ ڈاکٹر طاہر القادری نے بھی عمران خان کی طرف سے ٹیلیفون کر کے دھرنے میں شرکت کی دعوت کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ شرکت کی دعوت قبول کر لی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کرپٹ عناصر کے خلاف جنگ سے پیچھے نہیں ہٹ سکتے ۔مرتے دم تک شہیدوں کا خون بھول سکتا ہوں نہ معاف کر سکتا ہوں ۔انہوں نے کہا کہ میں خود شرکت کروں گا یا نہیں ابھی یہ فیصلہ نہیں ہوا ۔ تاہم تحریک انصاف اور عوامی تحریک کے قائدین اگلے 24گھنٹے میں ملاقات کریں گے ۔ذرائع کے مطابق دونوں رہنماؤں کے درمیان ٹیلیفونک رابطے میں تفصیلی بات چیت ہوئی جس میں ساتھ چلنے کے عزم کا اظہار کیا گیا۔ایک اور ذرائع کے مطابق پی ٹی آئی اور عوامی تحریک میں ڈیڈ لاک ختم کرنے میں شیخ رشید احمد نے مرکزی کردار ادا کیا ہے اور ان کی کوششوں او ربار بار کے اصرار پر ہی عمران خان نے ڈاکٹر طاہر القادری سے رابطہ کر کے انہیں دھرنے میں شرکت کی دعوت دی ۔ ذرائع کے مطابق شیخ رشید کی بھرپور کوشش ہے کہ ڈاکٹر طاہر القادری اسلام آباد کے دھرنے میں خود بھی شریک ہوں اور اس کیلئے وہ پاکستان میں موجود عوامی تحریک کے رہنماؤں سے بھی مسلسل رابطے میں ہیں۔جب اس سلسلہ میں عوامی تحریک کے ترجمان عبد الحفیظ چوہدری سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے رابطے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان نے ’رشتہ مانگنے ‘‘ کے حوالے سے میڈیا میں دئیے گئے اپنے بیانات پر ڈاکٹر طاہر القادری سے باضابطہ معذرت کر لی ہے جس کے بعد دونوں جماعتوں نے مل کر چلنے پر اتفاق کیا ہے۔ ترجمان نے مزید بتایا کہ دھرنے کی تیاریوں او ر اسے کامیاب بنانے کیلئے دونوں جماعتوں کے رہنماؤں کی کمیٹیاں بھی بنیں گی اور آئندہ ایک دو روز میں باضابطہ اجلاسوں کا سلسلہ شروع ہو جائے گا۔

مزید : صفحہ اول


loading...