مرمت کے نام پرشہروں میں10 ، دیہی علاقوں میں14 گھنٹے بجلی بند

مرمت کے نام پرشہروں میں10 ، دیہی علاقوں میں14 گھنٹے بجلی بند

لاہور (کامرس رپورٹر)ملک میں گرمی کی شدت میں نمایاں کمی کے باوجود بھی لوڈ شیڈنگ کے دورانیہ میں کمی نہیں ہو سکی ۔ منگلا سے پانی کے اخراج میں انتہائی کمی کے باعث منگلا کے تمام پاور جنریشن یونٹ بند کردیئے گئے ۔ پیداوار میں کمی کے باعث شارٹ فال میں تاحال کمی نہیں آ سکی ہے ۔ ملک میں بجلی کی ڈیمانڈ کم ہو کر پندرہ ہزار میگاواٹ کی سطح پر آ گئی ہے لیکن پیداوار میں کمی کے باعث شارٹ فال چھ ہزار کی سطح پر برقرار ہے ۔ ملک کے بیشتر علاقوں میں گرمی میں کمی سے اے سی کا استعمال بند ہو گیا ہے جس سے ڈیمانڈ میں کمی ہوئی ہے ۔ لیکن دوسری جانب پیداوار میں بھی کمی ہو گئی ہے ۔ ارسا کی جانب سے ڈیموں سے پانی کے اخراج میں مزید کمی کردی گئی ہے جس سے ہائیڈل کی پیداوار کم ہو کر دو ہزار میگاوا ٹ سے بھی کم کی سطح پر آ گئی ہے ۔ گزشتہ روز تربیلا سے پانی کے اخراج کم کرکے 45 ہزار کیوسک اور منگلا سے کم کرکے صرف دس ہزار کیوسک کر دیا گیا ۔آئی پی پیز اور تھرمل کی پیداوار بھی کم ہو کر صرف سات ہزار میگاواٹ کی سطح پر آئی ہوئی ہے ۔ گزشتہ روز شہروں میںآٹھ سے دس گھنٹے جبکہ دیہی علاقوں میں چودہ گھنٹے تک کی لوڈ شیڈنگ کی گئی جبکہ مرمت کے نام پر بھی بجلی کی بندش کاسلسلہ جاری رکھا گیا ۔ بیشتر سب ڈویژنوں میں دو سے تین فیڈرز مرمت کے نام پر صبح سات بجے سے لیکر دو اور چار بجے تک بند رکھے گئے ۔

بجلی بند

مزید : صفحہ آخر