پی ای این کا جماعت پنجم کے بورڈ امتحانات کے فیصلے کیخلاف احتجاج تحریک چلانے کا فیصلہ

پی ای این کا جماعت پنجم کے بورڈ امتحانات کے فیصلے کیخلاف احتجاج تحریک چلانے ...

صوابی(بیورورپورٹ )پرائیویٹ ایجوکیشن نیٹ ورک (PEN)خیبر پختونخوا نے صوبائی حکومت کی جانب سے جماعت پنجم کے بورڈ امتحانات کے فیصلے کے خلاف احتجاجی تحریک چلانے کا فیصلہ کر تے ہوئے واضح کر دیا کہ جب تک حکومت اپنے اس فیصلہ پر نظر ثانی کیلئے اسے مؤخر نہیں کرتی نجی تعلیمی ادارے اپنے احتجاج کا دائرہ وسیع کرتے جائیں گے صوبائی حکومت اپنے درباری افسران کی جاہلانہ چالبازیوں میں آکر شعبہ تعلیم کواندھی دلدل میں نہ دھکیلے اگر ایسا کیا گیا تو جہاں بچوں کے مستقبل کو خطرہ ہو گا وہاں یہ حکومت کیلئے بھی کوئی نیک شگون ثابت نہیں ہو گا نجی تعلیمی ادارے کسی ایسی پالیسی کی حمایت نہیں کریں گے جو ریاست کے تحفظ نئی نسل کے مستقبل کیلئے خطرہ ثابت ہوں وزیر اعلیٰ پرویز خٹک اور چیئر مین پاکستان تحریک انصاف عمران خان مداخلت کرکے تعلیم دشمن پالیسیوں کے خاتمے اورتعلیم دوست پالیسیوں کے استحکام میں اپنی زمہ داریاں نبھائیں ان خیالات کا اظہار پرائیویٹ ایجوکیشن نیٹ ورک(PEN)خیبر پختونخوا کے صوبائی صدر محمد سلیم خان اور صوبائی ڈپٹی جنرل سیکرٹری انس تکریم نے ایگزیکٹیو باڈی کے اجلاس سے خطاب کر تے ہوئے کیا انہوں نے مزید کہا کہ ہم اسلامی جمہوریہ پاکستان کو سیکولر پاکستان نہیں بننے دیں گے موجودہ تعلیمی سیشن اپنا نصف دورنیہ مکمل کر چکا ہے ایسے میں بچوں پر بورڈ امتحان مسلط کرنا کھلی ناانصافی ہے چند ٹکوں پر بکنے والے بعض حکومتی افسران آنے والی نسلوں کا مستقبل داؤ پر لگانے پر تلے ہوئے ہیں اسے یکساں تعلیمی نصاب قرار نہیں دیا جاسکتا اور نہ کوئی کام نعروں سے ممکن ہیصوبائی حکومت ایسے افسران پر نظر رکھے جو حکومت میں رہتے ہوئے ڈالروں کے لالچ میں اسی کے خلاف سازشوں کے مرتکب ہو رہے ہیں اگر صوبائی حکومت نے جماعت پنجم کے بورڈ امتحانات کے فیصلے پر نظر ثانی نہ کی تو نجی تعلیمی ادروں کے سربراہان طلباء اور ان کے والدین کے ہمراہ سڑکوں پر ہوں گے جس کے ذمہ دار حکومتی ممبران اور محکمہ تعلیم کے افسران ہوں گے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر