آئی جی پی نے پولیس اہلکاروں کو توصیفی اسناد اور انعامات دیئے

آئی جی پی نے پولیس اہلکاروں کو توصیفی اسناد اور انعامات دیئے

پشاور( کرائمز رپورٹر ) انسپکٹر جنرل آف پولیس خیبر پختونخوا ناصر خان دُرانی نے آج سنٹرل پولیس آفس پشاور میں منعقدہ ایک تقریب میں نوشہرہ پولیس کے اہلکاروں کو راہزنی اور ڈکیت گروپ کے ملزمان کو گرفتار کرکے اُن سے لوٹی ہوئی رقم اور اشیاء برآمد کرنے پر نقد انعامات اور توصیفی اسناد سے نوازا۔تفصیلات کے مطابق اکبرپورہ ضلع نوشہرہ کے ایک شہری نے تھانہ اکبرہ پورہ میں رپورٹ درج کرائی تھی کہ وہ اپنی موٹر کار میں ساتھیوں کے ہمراہ مویشی خریدنے کے لیے پنجاب جارہا تھا کہ راستے میں چار مسلح موٹر سائیکل سواروں نے گاڑی سے اُتار کر اُن پر تشدد کیا اوراسلحے کی نوک پر ان سے چھ لاکھ 90 ہزار روپے، ڈرائیونگ لائسنس موبائل فون (Samsung) بمع سم کارڈ نمبر 0300-5968534 چھین کر فرار ہوگئے۔ ڈی پی اُو نوشہرہ نے اس واقعے کا سختی سے نوٹس لیتے ہوئے ایک تفتیش ٹیم تشکیل دی۔ جس نے سائنسی خطوط پر تفتیش کو آگے بڑھاتے ہوئے اصل ملزمان کے گرد گھیرا تنگ کرتے ہوئے اُن کوقانون کی گرفت میں لایا اور اُن سے لوٹی ہوئی رقم واردات میں استعمال ہونے والی ایک عدد موٹر سائیکل، 30 بورپستول بمعہ 40 عدد کارتوس برآمد کیا۔ مدعی نے شناختی پریڈ میں علاقہ مجسٹریٹ کی موجودگی میں ملزمان کو شناخت بھی کیا۔ جبکہ ملزمان نے اعتراف جرم بھی کیا۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے آئی جی پی ناصر خان دُرانی نے مذکورہ واقع میں نوشہرہ پولیس کی تفتیشی ٹیم کی پیشہ ورانہ کمٹمنٹ کی تعریف کی۔ آئی جی پی نے کہا کہ معیاری تفیش کو پولیس فورس میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت حاصل ہے۔ اورپولیس فورس میں متعارف شدہ جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے دہشت گردی اور دیگرسنگین جرا ئم میں ملوث افراد کے خلاف پولیس فورس کو نمایاں اور اہم کامیابیاں ملی رہی ہیں اور انعامات یافتہ گان پر روز دیا کہ وہ پیشہ ورانہ فرائض کی ادائیگی کے دوران جدید ٹیکنالوجی سے بھرپور استفادہ کریں۔ اور ہر ایک وقوعہ کو بطور چیلنج قبول کرکے اُس کو ورک آؤٹ کرنے میں کوئی کسر نہ چھوڑیں۔ اس موقع پر جن پولیس افسروں و جوانوں کو نقد انعامات اور توصیفی اسناد سے نوازا گیا ان میں سب انسپکٹرز خادمین، اختر نصیر، یاسر خان اور کانسٹیبلان خالد نسیم، آیاز اور تنویر شامل تھے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...