کوہاٹ،گورنمنٹ ہائیر سیکنڈری سکول بلی ٹنگ میں تعلیمی ایمرجنسی کا پول کھل گیا

کوہاٹ،گورنمنٹ ہائیر سیکنڈری سکول بلی ٹنگ میں تعلیمی ایمرجنسی کا پول کھل گیا

کوھاٹ (بیورو رپورٹ) گورنمنٹ ہائیر سیکنڈری سکول بلی ٹنگ میں تعلیمی ایمرجنسی کا پول کھل گیا 13 ٹیچرز کی آسامیاں خالی‘ طلبہ اور سکول انتظامیہ مشکلات کا شکار‘ ناظم بلی ٹنگ عصمت اللہ خان نے ایک اخباری بیان میں کہا ہے کہ صوبائی حکومت میں تعلیم کے فروغ کے لیے اربوں روپے مختص کر رہی ہے لیکن افسوس ہو صرف بلڈنگ کی تعمیر تک ہی محدود ہوتا ہے تعلیمی ایمرجنسی کے بلند و بانگ دعوؤں کے باوجود بھی کوھاٹ کے درجنوں ادارے سٹاف سے محروم ہیں ان کا کہنا تھا کہ گورنمنٹ ہائیر سیکنڈری سکول بلی ٹنگ کے طلبہ کی تعداد 1400 سے تجاوز کر چکی ہے لیکن اب بھی اس میں ایس ایس اکنامکس‘ ایس ایس کمپیوٹر انسٹرکٹر‘ ایس ایس ٹی جنرل ایک اور ایس ایس ٹی سائنس 4‘ جبکہ 4 سی ٹی اور ایک DM کی پوسٹیں خالی ہیں جس سے طلبہ‘ اساتذہ اور سکول انتظامیہ شدید مشکلات کا شکار ہیں انہوں نے ایم پی اے حلقہ امجد آفریدی ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر گوہر علی خان اور ڈائریکٹر ایجوکیشن رفیق خٹک سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر