آئینی ترامیم کرکے جنوبی پنجاب علیحدہ صوبہ قائم کیا جائے‘ وکلاء

آئینی ترامیم کرکے جنوبی پنجاب علیحدہ صوبہ قائم کیا جائے‘ وکلاء

ملتا ن(خبر نگار خصو صی)صدر ڈسٹرکٹ بارایسوسی ایشن ملتان عظیم الحق پیرزادہ اورسرائیکستان ڈیموکریٹک پارٹی وکلاء ونگ کے سربراہ راناعارف کمال نون نے کہا ہے کہ حکومت سے مطالبہ(بقیہ نمبر55صفحہ12پر )

کرتے ہیں کہ وہ فوری طورپرآئینی ترامیم کرکے جنوبی پنجاب میں علیحدہ صوبہ قائمکرے بصورت دیگرجنوبی پنجاب میں علیحدہ صوبہ کے حصول کیلئے تحریک چلائی جائے گی۔ان خیالات کا اظہارانھوں نے گزشتہ روز ڈسٹرکٹ بارہال ملتان میں مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ہے انھوں نے مزید کہا کہ جنوبی پنجاب میں5کروڑسے زیادہ کی آبادی ہے اور جنوبی پنجاب خطہ کاصوبہ پنجاب کے ریونیواورآمدنی میں مرکزی کردارہے اورملتان جنوبی پنجاب کامرکزی شہرہے لیکن گزشتہ کئی دہائیوں سے جنوبی پنجاب کے اس خطہ کوجان بوجھ کراوربدنیتی سے احساس محرومی کی دلدل میں دھکیل دیاگیاہے اوراستحصال کی تلوارسے وارکرکے اس خطے کے لوگوں کے حقوق غصب کیے جارہے ہیں اورحقوق کی تلفی یہاں کے لوگوں کی اب برداشت سے باہرہوچکی ہے تاجروں،وکلاء ،ڈاکٹرز،مزدور،کسانوں،سیاست دانوں،انجینئرزاوراستاتذہ کے نمائندوں سے رابطے مکمل ہونے پرڈسٹرکٹ بار میں جنوبی پنجاب کانمائندہ کنونشن منعقدکیاجائے گااورتخت لاہورسے آزادہونے کے لیئے علیحدہ صوبہ حاصل کرنے کے لیئے تحریک چلائی جائے گی۔ پریس کانفرنس میں جنرل سیکریٹری محمدعمران خان خاکوانی،راؤمحمدامجدنائب صدر، سید طاہر منصور بخاری فنانس سیکریٹری اورسرائیکستان ڈیموکریٹک پارٹی کی جانب سے رانافراز نون ،صدرسیدمہدی الحسن شاہ،سیکریٹری جنرل عنایت اللہ مشرقی،سیدمطلوب حسین بخاری اورملک اللہ نوازوینس ایڈووکیٹ شامل تھے۔

وکلاء

مزید : ملتان صفحہ آخر