کاٹن سیزن 2016-17 ء ؁ میں ایک کروڑ 20 لاکھ گانٹھ پیداوار کا امکان

کاٹن سیزن 2016-17 ء ؁ میں ایک کروڑ 20 لاکھ گانٹھ پیداوار کا امکان

ملتان(جنرل رپورٹر) پاکستان کاٹن جنرز ایسوسی ایشن(پی سی جی اے)کی سنٹرل ایگزیکٹو کمیٹی نے پی سی جی اے کی کاٹن سیکٹر کی بحالی کے لئے تجاویز وسفارشات جاری رکھنے اور کپاس اگاؤ (بقیہ نمبر32صفحہ7پر )

معیشت بچاؤ مہم کو ملکی معیشت کی بقاء و تحفظ کی علامت قرار دیا ہے۔ایسوسی ایشن کے مطابق ملک میں کاٹن سیزن2016-17میں ایک کروڑ 20لاکھ گانٹھ کپاس کی پیداوار کا امکان ہے۔ کاٹن بیلٹ میں کپاس کی اوسط پیداوار بہتر ہے اور فصل کی کوالٹی و کراپ سائز بہتر ہے۔ کاشتکاروں کو فصل کا بہتر معاوضہ مل رہا ہے۔ جنرز بھی فصل کے سائز‘ ملکی و انٹرنیشنل مارکیٹ کو مد نظر رکھتے ہوئے کاروبار کریں۔ڈیمانڈ اینڈ سپلائی کے اصولوں کے تحت کاروبار کریں اور سٹے بازی سے اجتناب کریں چےئرمین ڈاکٹر جسومل کی زیر صدارت اجلاس میں اہم فیصلے کئے گئے۔ اجلاس میں کہا گیا کہ اچھی شہرت کی حامل ٹیکسٹائل ملوں کو روئی فروخت کی جائے۔ایف پی سی سی آئی کی سنٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کے لئے حاجی محمد اکرم اور جنرل باڈی کے لئے رانا مسعود عارف کے ناموں کی نامزدگی دی گئی‘ویب سائٹ اپ گریڈیشن اور جدید ٹیکنالوجی سے بھرپور استفادہ کی منظوری دی گئی۔اجلاس میں ٹیکسوں کی بروقت ادائیگی یقینی بنانے بالخصوص بنولہ پر6روپے فی من ادائیگی یقینی بنانے کی ہدایات کی گئی تاکہ جنرز کو کسی پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے۔پی سی جی اے ممبران سے کہا گیا کہ کاروبار رجحانات کو مد نظر رکھتے ہوئے کاروبار کریں۔ اجلاس میں سینئر وائس چےئرمین سہیل محمود ہرل‘وائس چےئرمین پریم چند کوہستانی‘ شہزاد علی خان‘ ملک سرفراز ناظم اعوان‘ فضل الٰہی‘ شیخ اشفاق احمد‘ محمد ارشد‘شیخ محمد اخلاق‘ عبدالستار‘ شام لال‘ قیصر رضا‘ محمد سلیم اختر‘افتخار علی جاوید‘ مرغوب علی بٹ ‘چوہدری وحید ارشد اور سیکرٹری جنرل آصف خلیل نے شرکت کی۔

پی سی جی اے 149

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...