ہائی کورٹ:وکلاءنے اپنے وکیل بھائی کو ہی پھینٹی لگا دی

ہائی کورٹ:وکلاءنے اپنے وکیل بھائی کو ہی پھینٹی لگا دی
ہائی کورٹ:وکلاءنے اپنے وکیل بھائی کو ہی پھینٹی لگا دی

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ میں وکلاءنے اپنے وکیل بھائی کو ہی تشدد کا نشانہ بنا ڈالا،لاہور ہائیکورٹ کی جسٹس ارم سجاد گل نے ضمانت کی ایک درخواست پر سماعت کی جس میں مدعی کے وکیل عبدالقیوم اور ملزم کے وکیل صائم علی سمیت دیگر وکلاءمین تلخ کلامی ہو گئی، بات یہیں پر ختم نہیں ہوئی بلکہ کمرہ عدالت سے باہر نکلتے ہی صائم علی ایڈووکیٹ نے ساتھوں سے مل کر عبدالقیوم ایڈووکیٹ کو تشدد کا نشانہ بنا کر لہو لہان کر دیا تاہم موقع پر موجود سکیورٹی اہلکاروں نے بیچ بچاﺅ کرایا.

زخمی وکیل عبدالقیوم نے الزام عائد کیا کہ ہائیکورٹ بار کے نائب صدر سردار طاہر شہباز کی پشت پناہی پر اسے تشدد کا نشانہ بنایا گیا تاکہ وہ کیس کی پیروی چھوڑ دے، صورتحال کو دیکھتے ہوئے سینئر وکلاءزخمی وکیل اور دیگر وکلاءکو کمیٹی روم میں لے گئے تاہم زخمی وکیل نے کمیٹی روم میں جانے سے انکار کرتے ہوئے الزام عائد کیا کہ ہائیکورٹ بار کے جس عہدیدار کی پشت پناہی پر اسے تشدد کا نشانہ بنایا گیا وہ کمیٹی روم میں موجود ہے، اس لئے اسے ہائیکورٹ بار کے عہدیداروں سے انصاف کی توقع نہیں ہے، ہائیکورٹ بار کے نائب صدر سردار طاہر شہباز کا کہنا ہے کہ زخمی وکیل کے الزامات بے بنیاد ہیں۔

مزید : لاہور