بیٹی کو قتل کرکے لاش گڑھے میں پھینکنے والے سوتیلے باپ کا چالان سیشن عدالت میں پیش کردیاگیا

بیٹی کو قتل کرکے لاش گڑھے میں پھینکنے والے سوتیلے باپ کا چالان سیشن عدالت میں ...
بیٹی کو قتل کرکے لاش گڑھے میں پھینکنے والے سوتیلے باپ کا چالان سیشن عدالت میں پیش کردیاگیا

  


لاہور(نامہ نگار)گلشن اقبال میں 22سالہ بیٹی کو قتل کرکے لاش گڑھے میں پھینکنے والے سوتیلے باپ کا چالان سیشن عدالت میں پیش کردیاگیاہے۔سیشن جج لاہور نذیر احمد گجانہ نے گلشن اقبال پولیس کی جانب سے باپ کے ہاتھوں قتل ہونے والی حمیرا کے قتل کا چالان سماعت کے لئے ایڈیشنل سیشن جج ندیم انصاری کی عدالت میں بھجوادیاہے۔

عدالت میں پیش کئے گے چالان میں حمیرا کے سوتیلے والد اور ساتھی شوکت کو نامزد کررکھا ہے۔ چالان آنے پر ملزم کو 27اکتوبر کو جیل سے طلب کرلیا گیا ہے۔ ملزم ادریس کے خلاف مقدمہ اس کی بیوی زرینہ نے درج کرایا تھا جس میں اس نے موقف اختیار کیا تھا کہ اس کی شادی 1986ءمیں امین کے ساتھ ہوئی جس سے اس کے 4بچے پیدا ہوئے ،بعد میں امین نے اس کو طلاق دے دی ،تین فروی 2015ءکو اس کی بیٹی حمیرا غائب ہوگئی اس نے کافی تلاش کیا لیکن اس کا پتہ نہ چلا اسی دوران ادریس نے اس سے جھگڑا کیا اور اس کو دھمکی دی کہ جس طرح اس سے حمیرا کو ٹھکانے لگا دیا ہے اس کو بھی لگا دے گا۔

اس پر اس کو شک ہوا اسی دوران اس کواخبار سے معلوم ہوا کہ ایک لڑکی کی لاش گڑھے سے پولیس کو ملی ہے اس نے جا کر لاش کو دیکھا تو اس کی بیٹی حمیرا کی تھی جس کو اس کے شوہرادریس نے کسی کے ساتھ مل کر قتل کرکے پھینک دیا تھا۔ اس نے لاش کو شناخت کیا اور پولیس کوخاوند پر شبہ ظاہر کیا جس کے بعد پولیس نے اسے شامل تفتیش کیا اوراسے گرفتار کرلیا۔

مزید : لاہور


loading...