مقبوضہ کشمیرکے حالات حکومت کے اختیارمیں نہیں رہے،سابق کٹھ پتلی وزیراعلیٰ نے اعتراف کرلیا

مقبوضہ کشمیرکے حالات حکومت کے اختیارمیں نہیں رہے،سابق کٹھ پتلی وزیراعلیٰ نے ...
مقبوضہ کشمیرکے حالات حکومت کے اختیارمیں نہیں رہے،سابق کٹھ پتلی وزیراعلیٰ نے اعتراف کرلیا

  

سری نگر(مانیٹرنگ ڈیسک)کشمیرکے حالات حکومت کے اختیارمیں نہیں رہے،مقبوضہ کشمیرکے سابق کٹھ پتلی وزیراعلیٰ فاروق عبداللہ نے اعتراف کرلیا۔

مقبوضہ کشمیرکے سابق وزیراعلیٰ فاروق عبداللہ نے بھارتی چینل کوانٹرویو دیتے ہوئے کہا ہے کہ مذاکرات کا وعدہ اب تک کیوں نہیں کیے،مودی،محبوبہ مفتی کی جماعت نے حریت رہنماو¿ں سے مذاکرات کاوعدہ کیا،مشکلات تھیں لیکن برہان وانی کے واقعے نے کشیدگی کوبڑھا دیا،کشمیرکے حالات حکومت کے اختیارمیں نہیں رہے،وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی صورتحال سنبھالنے میں ناکام ہیں۔

انہوں نے کہا ہے کہ بھارتی وزیراعظم کشمیرکے مسئلے میں دلچسپی نہیں رکھتے،اسکول کالج دکانیں کشمیرمیں سب بند پڑے ہیں،سکول کالج دکانیں کشمیرمیں سب بند پڑے ہیں،کشمیرکے حالات حکومت کے اختیارمیں نہیں رہے،مقبوضہ کشمیرکی صورتحال کو برے طریقے سے ڈیل کیاجارہا ہے۔

مزید : بین الاقوامی