صحرا میں سائنسدانوں کو دنیا کا خطرناک ترین کیڑا مل گیا، اتنا زہریلا کہ کوئی قریب سے بھی گزرجائے تو نشانہ بن جائے، تفصیلات جان کر آپ سانپوں کو بھول جائیں

صحرا میں سائنسدانوں کو دنیا کا خطرناک ترین کیڑا مل گیا، اتنا زہریلا کہ کوئی ...
صحرا میں سائنسدانوں کو دنیا کا خطرناک ترین کیڑا مل گیا، اتنا زہریلا کہ کوئی قریب سے بھی گزرجائے تو نشانہ بن جائے، تفصیلات جان کر آپ سانپوں کو بھول جائیں

  


میڈرڈ(مانیٹرنگ ڈیسک) سپین کے صحرا میں سائنسدانوں نے ایک خطرناک ترین کیڑا دریافت کر لیا ہے جو اس قدر زہریلا ہے کہ آپ خوفناک سانپوں کو بھی بھول جائیں گے۔ برطانوی اخبار ڈیلی سٹار کی رپورٹ کے مطابق اس کیڑے کی 414ٹانگیں ہیں اوراس میں زہر پیدا کرنے والے 200غدود موجود ہیں۔ یہ اتنا زہریلا ہے کہ آدمی کے پاس سے بھی گزر جائے تو وہ نشانہ بن سکتا ہے۔

رپورٹ کے مطابق سائنسدانوں نے اس کیڑے کا نام illacme tobiniرکھا ہے۔ انہیں یہ کیڑا سپین کے علاقے گرینیڈا میں ایک غار سے ملا ہے۔حیران کن طور پر اس کی چار ٹانگیں جنسی اعضاءکا کام بھی کرتی ہیں۔ سائنسدانوں کے مطابق یہ جب چاہے ان چار ٹانگوں سے جنسیت کا کام لے سکتا ہے۔اس کا تعلق بھی ملی پیڈ فیملی سے ہے۔ اس سے قبل اسی فیملی کا ایک کیڑا illacme penipesدریافت ہوا تھا جس کی 750ٹانگیں تھی۔ یہ دونوں مخلوقات دیکھنے میں ایک جیسی ہیں، ان کی نسل بھی ایک ہے اور ان میں ریشم پیدا کرنے کی صلاحیت بھی مماثل ہے۔ تاہم حالیہ دریافت ہونے والے کیڑے میں زہر کے غدود اور جنسی اعضاءزیادہ ہیں جو اسے دوسرے کیڑے سے منفرد بناتے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...