مہمندڈیم اور گنداؤ سمال ڈیم کی تعمیر سے زراعت، لائیو سٹاک ترقی کریگی، محب اللہ خان

مہمندڈیم اور گنداؤ سمال ڈیم کی تعمیر سے زراعت، لائیو سٹاک ترقی کریگی، محب ...

  



مہمند (نمائندہ پاکستان) مہمند، مہمند ڈیم اور گنداؤ سمال ڈیم کی تعمیر سے زراعت اور لائیو سٹاک کو ترقی ملے گی۔ 72 سالہ ناکامیوں اور کوتاہیوں کو مد نظر رکھتے ہوئے تحریک انصاف معاشی ترقی کیلئے سر گرم عمل ہے۔ وزیر اعظم عمران خان کو قبائی عوام کی محرومیوں کا احساس ہے۔ ملک میں 85 فیصد لوگ تنخواہ دار نہیں، خاندان کی کفالت کیلئے زراعت اور لائیو سٹاک پر انحصار کر رہے ہیں۔ قیام پاکستان سے 2018 تک زراعت و لائیو سٹاک پر صرف 70 ارب روپے صوبے پر خرچ ہوئے۔ عمران خان کی حکومت 5 سال میں 85 ارب روپے خرچ کرینگے۔ ان خیالات کا اظہار خیبر پختونخواہ کے وزیر زراعت و لائیو سٹاک محب اللہ خان نے دورہ ضلع مہمند کے دوران تحصیل حلیمزئی کمالی حجرہ ملک صداد میں کاشتکاروں اور قبائی عمائدین سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ایگری کلچر آفیسر ضلع مہمند آصف اقبال اور اسسٹنٹ ڈائریکٹر لائیو سٹاک ضلع مہمند مفتی عبدالرازق نے صوبائی وزیر کو ضلع مہمند کے زراعت و لائیو سٹاک پر بریفنگ دی۔ اس موقع پر ڈائریکٹر ایگریکلچر ضم شدہ اضلاع محب اللہ خان، ڈائریکٹر لائیو سٹاک ملک آیاز وزیر، سیکرٹری زراعت اسرار خان، ڈائریکٹر ہیڈ کوارٹر ڈاکٹر عالمزیب بھی موجود تھے۔ تقریب میں ملک حاجی احمد اور ملک صاحب داد نے خطاب کرتے ہوئے ضلع مہمند کے کاشتکاروں اور عام لوگوں کے مسائل سے انہیں آگاہ کیا۔ بعد ازاں خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر محب اللہ خان نے کہا کہ 72 سال میں سابقہ حکومتوں نے زراعت اور لائیو سٹاک پر کوئی توجہ نہیں دی۔ اور صرف ستر ارب روپے اس دوران خرچ ہوئے مگر تحریک انصاف کی حکومت اور وزیر اعظم عمران خان نے پاکستانی عوام کی محرومیوں کو مد نظر رکھ کر پالیسی ترتیب دی ہے۔ کیونکہ پاکستان کی پچاسی فیصد آبادی غیر تنخواہ دار ہیں۔اور زیادہ تر انحصار زراعت، لائیو سٹاک اور فشریز پر کرتے ہیں۔ اس لئے موجودہ حکومت پانچ سال کے دوران اس مد میں پچاسی ارب روپے خرچ کیرنگے۔ جس میں خیبر پختونخواہ کا حصہ بننے والے قبائلی اضلاع کو خصوصی توجہ دی جائیگی اور یہاں کے زراعت و لائیو سٹا کی ترقی پر خطیر رقم خرچ کی جائیگی۔ کیونکہ قبائلی عوام نے پاکستان کی سالمیت اور استحاکم کیلئے بے پناہ قربانیاں دی ہے۔ اور امن و امان کی بحالی میں قبائلی مشران نے جانی نذرانے پیش کر کے نیا تاریخ رقم کی ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر