آزادی مارچ کیخلاف حکومتی تیاری مکمل‘ آج مرکزی رہنماؤں کی گرفتاری کا امکان

آزادی مارچ کیخلاف حکومتی تیاری مکمل‘ آج مرکزی رہنماؤں کی گرفتاری کا امکان

  



ملتان (وقا ئع نگار) پنجاب پولیس نے جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کے آزادی مارچ سے نمٹنے کیلئے تیاریاں مکمل کرلیں، حکومتی حکم کے بعد آج رات 12 بجے سے پنجاب میں موجود اعلیٰ قیادت کی گرفتاریاں متوقع ہیں۔پولیس ذرائع کے مطابق تمام قیادت کی فہرستیں متعلقہ آرپی اوز، ڈی پی اوز کو فراہم کردی گئی ہیں۔ حکومتی اشارے پر فوری گرفتاریاں شروع کردیں جائے گی۔ تاکہ آزادی مارچ میں کم سے کم کارکن شریک ہوں، راستوں کی بندش اور کنٹینرز کی نقل وحمل کیلئے اہم راستوں کو بند(بقیہ نمبر11صفحہ12پر)

کرنے کیلئے لاہور صوبہ بھر سے 7 کرینیں جبکہ قیدیوں کی 60 گاڑیاں بھی مانگ لی گئی ہیں تاکہ ہنگامی صورتحال میں استعمال کی جاسکیں۔ آئی جی پنجاب نے ایس ایس پی ایم ٹی کو کرینیں اور گاڑیاں بھجوانے اور صوبہ بھر میں آزادی مارچ کے حوالے سے پولیس ڈیوٹی کا نقشہ بنا کر لائحہ عمل بھی آج ہی پیش کرنے کا حکم دیا ہے.گزشتہ روز صوبہ بھر میں 503 اضافی ریزرو بھجوا دی گئی ہیں جن کو 26 اکتوبر کو رپورٹ کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔ دریں اثنا ممکنہ آزادی مارچ تحریک میں مجمع خلاف قانون منتشر کرنے کیلئے ملتان پولیس نے (31) تھانوں میں اینٹی رائٹ سامان مہیا کردیا ہے۔معلوم ہوا ہے ستائیس اکتوبر کو ملک بھر ممکنہ آزادی مارچ شروع ہو رہا ہے۔جو انتیس کو ملتان پہنچے گا۔اس حوالے سے ضلع ملتان کی پولیس نے آزادی مارچ تحریک میں مجمع خلاف قانون منتشر کرنے کے اینٹی رائٹ سامان (حفاظتی سامان) ہر تھانے کی سطح پر مہیا کر دیئے گئے ہیں۔جن میں ڈنڈے۔ہیلمنٹ۔جیکٹ۔انسو گیس شیل وغیرہ شامل ہیں۔اس کے ساتھ ساتھ نفری کو بھی الرٹ رہنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر