انتظار قتل کیس،عدالت کا بڑا فیصلہ، کتنے اہلکاروں کو سزائے موت سنادی؟

انتظار قتل کیس،عدالت کا بڑا فیصلہ، کتنے اہلکاروں کو سزائے موت سنادی؟
انتظار قتل کیس،عدالت کا بڑا فیصلہ، کتنے اہلکاروں کو سزائے موت سنادی؟
سورس: File

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) انسداد دہشت گردی (اے ٹی سی) کی عدالت نے انتظار قتل کیس کا فیصلہ سنادیا۔ عدالت نے دو اہلکاروں کو سزائے موت جب کہ تین کو عمر قید کی سزا سنا دی۔

اے ٹی سی  نے انتظار قتل کیس میں  اینٹی کار لفٹنگ  سیل (اے سی ایل سی)  کے دو اہلکاروں کو سزائے موت سنا دی۔ عدالت نے انسپکٹر طارق رحیم سمیت تین ملزمان کو عمر قید کی سزا سنائی ہے۔ اس کے علاوہ پانچوں ملزمان پر دو دو لاکھ روپے جرمانہ بھی عائد کیا گیا ہے۔  اے ٹی سی نے ایک ملزم اہلکار غلام عباس چوہدری کو  عدم شواہد کی بنا پر کیس میں بری کیا ہے۔ عدالت نے جن دو ملزمان کو سزائے موت سنائی ان میں بلال اور دانیال شامل ہیں۔

خیال رہے کہ جنوری 2018 میں اے سی ایل سی اہلکاروں نے کراچی  کے علاقے ڈیفنس میں 19 سالہ نوجوان انتظار کو فائرنگ کرکے قتل کردیا تھا۔ کیس میں اے سی ایل سی کے آٹھ اہلکار گرفتار تھے۔ اے ٹی سی نے رواں برس جولائی  میں کیس کا فیصلہ محفوظ کیا تھا جو آج سنایا گیا ہے۔

مزید :

Breaking News -علاقائی -سندھ -کراچی -