"کرپٹ لوگوں کے بچے شہزادے، شہزادیاں بنے ہوئے ، جوا خانوں میں عرب شیخوں سے زیادہ پیسے دکھاتے ہیں" رحمان ملک  کا تہلکہ خیز دعویٰ

"کرپٹ لوگوں کے بچے شہزادے، شہزادیاں بنے ہوئے ، جوا خانوں میں عرب شیخوں سے ...
سورس: File

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) سابق وزیر داخلہ و چیئرمین انسٹی ٹیوٹ آف ریسرچ اینڈ ریفارمز (آئی آر آر) سینیٹر رحمان ملک نے کہا ہے کہ قوم 'نیا پاکستان' سے تنگ آچکی ہے اور اپنے 'پرانے پاکستان' کو واپس لانے کی دعائیں کر رہے ہیں، نئے پاکستان نے عوام کو قیمتوں میں اضافے ، مہنگائی ، خودکشیاں، مصائب ، بدترین امن و امان کی صورتحال ، جرائم کی شرح میں اضافہ ، فحاشی ، منشیات کی لت ، کرنسی کی بے قابو کمی ، امیر اور غریب کے درمیان وسیع فرق اور سفارتی تنہائی کے سوا کچھ نہیں دیا ۔ یہاں کرپٹ لوگوں کے بچے شہزادے ، شہزادیاں بنے ہوئے ہیں جو بیرونِ ملک جوا خانوں میں عرب شیخوں سے زیادہ پیسے دکھا  رہے ہیں۔

اپنے ایک بیان میں رحمان ملک نے کہا  کہ 'پرانے پاکستان' میں انسانی اقدار زیادہ اور بدعنوانی کم ہوا کرتی تھی جب کہ 'نئے پاکستان' میں کرپٹ اپنی دولت اور پیسے کی طاقت سے زبردستی عزت کا انتظام کر رہے ہیں۔ نئے پاکستان میں مختلف مافیاز پیسے کے زور پر پارلیمنٹ میں داخل ہو رہے ہیں ۔

 انہوں نے کہا کہ پاکستانی سیاست اب مافیاز اور الیکٹ ایبلز کے لیے مخصوص ہو چکی ہے جبکہ پارٹیوں کے کارکن سیاسی نعروں کے لیے رہ گئے ہیں۔ انہوں نے سوال کیا کہ کیا یہ جمہوریت ہے اور کیا عوام اس نظام کا احترام کریں گے جہاں ان کے ووٹ اپنے مقاصد کے لیے فروخت کیے جاتے ہیں؟۔ 

سابق وزیر داخلہ  نے مزید کہا کہ بدعنوانوں کے بچے ہمارے ملک کے خود ساختہ شہزادے اور شہزادیاں ہیں جو عالمی جوئے بازی کے اڈوں میں کھیلتے ہیں اور عرب شیخوں کے مقابلے میں زیادہ پیسے دکھاتے ہیں۔ انہوں نے اس بات کا اظہار کیا کہ وہی نسل دارالحکومت سنبھالے گی جو ملک پر اپنے کرپٹ طریقوں سے حکمرانی کرے گی جس سے عوام کے لیے مزید مسائل پیدا ہوں گے ۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -