آسٹریا میں ماہ ربیع الاول کے دوران مسلم کمیونٹی کی جانب سے مذہبی محافل کا انعقاد

آسٹریا میں ماہ ربیع الاول کے دوران مسلم کمیونٹی کی جانب سے مذہبی محافل کا ...
آسٹریا میں ماہ ربیع الاول کے دوران مسلم کمیونٹی کی جانب سے مذہبی محافل کا انعقاد

  

ویانا (اکرم باجوہ)ماہ ربیع الاول کا مہینہ شروع ہوتا ہے پوری دنیا سمیت آسٹریا بھرمیں بھی چھوٹی بڑی محفلوں کا اہتمام کیا جاتا ہے اسی سلسلہ میں اعوان ٹرانسپورٹ ویاناکے ڈائریکٹر معروف سماجی و مذہبی کاروباری شخصیت حاجی ملک آمین اعوان کی جانب سے اعوان آشیانہ ویانامیں 16 واں سالانہ جشن عیدمیلادالنبی  (صلی) زکر نعت محفل کا انعقاد کیا گیا جس میں یورپ کے ممالک پولینڈ،ہنگری اور آسٹریا بھر کے مختلف شہروں سے پاکستانی کمیونٹی نے اور پاکستان سفارت خانہ کے اعلیٰ افسران اور کمیونٹی افیرز قونصلر ہمایوں شبیر جوئیہ نے مہمان خصوصی کے طور پر شرکت کی۔ تقریب کا آغاز حافظ محمد ارشد کی تلاوت قرآن پاک سے کیا گیا۔نعت شریف کی صورت میں حضور نبی اکرم ﷺ کو ہدیہ عقیدت پیش کرنے والوں میں یورپ کے معروف نعت خواں شہر یار خان، سفیان شاہد،عبیر اعوان،خلدعباس،زبیر اعوان،خلیل احمد،مقصود احمد مغل،ممتاز حسین،حاجی اکبر علی،طاہر عباس جنجوعہ،اختر باجوہ،میزبان حاجی ملک آمین اعوان و دیگر شامل تھے۔ نظامت کے فرائض حفیظ اللہ قادری نے ادا کیے اور قصیدہ بردہ شریف حاضرین کے ساتھ مل کر پڑھا۔تقریب میں خصوصی خطاب کرنے کے لیے پولینڈ سے تشریف لائے علامہ مدثر باجوہ نے اپنے مخصوص مدلل انداز میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کفر و شرک کا اندھیرا چھایا ہوا تھا ظلم و جبر نے اپنے منحوس پنجے معاشرے میں گاڑ رکھے تھے پورا معاشرہ ٹوٹ پھوٹ کا شکار تھا انسانیت زوال اور انحطاط کی طرف سرک رہی تھی ماں بہن اور بیٹی کے رشتوں کو پامال کیا جا رہا تھا۔ لیکن اللہ تعالیٰ نے ہدایت کی منور راہیں کھولنے کا فیصلہ کیا اور ربیع الاوّل ماہ مبارک میں اپنی رحمتوں کی لامتناہی وسعتوں کیساتھ اپنے پیارے محبوبﷺ کو دنیا میں بھیجا پھر انسانی تہذیب کے قرینے تبدیل ہو گئے گھپ اندھیروں کے بطن سے روشنی نے اڑان بھری اور آناً فاناً پورے عالم میں نورہدایت جگمگانے لگا شکستہ حال اور لاچار لوگوں کو سہارا ملا یتیموں کا اکیلا پن ختم ہوا وہ پیارا نام محمدﷺ جس کی برکتیں لامتناہی ہیں کے ذکر کی رفعتیں بے کنار ہیں جس کے ہم سب امتی ہیں رسولﷺکی آمد سے کفر والحاد کے شبستانوں میں زلزلہ بپا ہوا قیصر و کسریٰ کے محلات لرز اٹھے اندھیری راتوں کے ٹکڑوں کی طرح چھائے سیاہ فتنے زائل ہو گئے رحمت دوعالمﷺ کی آمد سے پوری فضا اس قدر معطر ہوئی کہ عرب و عجم جگمگا اٹھا۔ 

حضورﷺ آئے تو انسانوں کو جینے کا شعور آیا،وہ شعور جو حضور ﷺ نےتقسیم کیا،صحابہ کرامؓ نے وصول کیا تعلیمات محمدیہ ﷺکو اپنایا اپنی زندگیوں کو تبدیل کیا۔شہر یار خان نے حاضرین کے ساتھ مل کر درودو اسلام پیش کیا۔اجتمائی دعائیہ کلمات میں علامہ مدثر باجوہ نے امت مسلمہ پاکستان کی ترقی اور سلامتی کی دعا اور حاضرینِ شرکاء کے لواحقین جو اس دنیا سے رخصت ہو چکے ہیں انکی مغفرت کے لیے اور میزبان محفل کے لیے خصوصی دعائیں کی گئیں۔ تقریب کے احتتام پر میزبان محفل حاجی ملک محمد امین اعوان نے حاضرین شرکاء کا تقریب میں شرکت کرنے پر شکریہ ادا کیا۔اخر میں مہمانوں کو میلاد ڈنر پیش کیا گیا۔

مزید :

تارکین پاکستان -