یہودی تہواروں پر اسرائیل نے مسجد ابراھیمی کو مسلمانوں کے لیے بند کر دیا

یہودی تہواروں پر اسرائیل نے مسجد ابراھیمی کو مسلمانوں کے لیے بند کر دیا

  



الخلیل ( اے این این )اسرائیلی فوج نے اتوار کے روز مغربی کنارے کے قدیم تاریخی شہر الخلیل میں جلیل القدر پیغمبر حضرت ابراھیم علیہ السلام سے منسوب مسجد ابراھیمی میں مسلمانوں کے داخلے پر پابندی عائد کردی ہے۔ یہودی عیدوں کے موقع پر حرم ابراھیمی میں صرف یہودی آباد کار اپنی رسوم ادا کرینگے۔مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق مقامی ذرائع نے بتایا کہ اسرائیلی حکومت نے حرم اور اس کے دروازوں کو مکمل طور پر بند کردیا ہے۔ الخلیل کی اولڈ میونسپلٹی میں یہودی بستیوں کی حفاظت اور یہودی تہوار کے نام پر اسرائیلی فوج کی بڑی تعداد نے مسجد ابراھیمی کا محاصرہ کرلیا ہے اس دوران کسی مسلمان نمازی کو مسجد کے قریب بھی جانے کی اجازت نہیں ہے۔یاد رہے کہ اسرائیلی فوج نے سن 1994 میں باروخ گولڈ سٹائن نامی یہودی کے مسجد ابراھیمی میں آگ لگانے کے واقعے کے بعد اسے یہودیوں اور مسلمانوں کے مابین تقسیم کردیا تھا۔ انتہا پسند یہودیوں کی جانب سے مسجد کو نذر آتش کرنے کے اس واقعے میں دوران نماز متعدد نمازی شہید اور زخمی ہوگئے تھے۔

مزید : عالمی منظر