اسرائیل مغربی کنارے میں ہفتہ وار 13 گھر منہدم کر رہا ہے ¾یو این او

اسرائیل مغربی کنارے میں ہفتہ وار 13 گھر منہدم کر رہا ہے ¾یو این او

  



مقبوضہ بیت المقدس( اے این این )اقوام متحدہ کے ایک ذیلی ادارے کی جانب سے جاری رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اسرائیل کی جانب سے فلسطینی شہریوں پر حملوں میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ اس سال کے آغاز سے خاص طور پر یہودی آباد کاروں اور سکیورٹی اہلکاروں نے فلسطینی گھروں پر حملے تیز کردیے ہیں۔اقوام متحدہ کے ادارے آفس فار کوآرڈینیشن آف ہیومینی ٹیرین افیئرز (OCHA) نے اپنے رپورٹ میں بتایا کہ اسرائیل نے سن 2012 کے آغاز سے لیکر اب تک مغربی کنارے میں 465 عمارتوں کو مسمار کیا ہے جن میں 136 رہائشی گھر بھی شامل تھے۔ اس طرح اسرائیل ہر ہفتے بارہ عمارتیں منہدم کر رہا ہے، صہیونی حکومت کی ان کارروائیوں میں اب تک 676 افراد اپنا گھر چھوڑ کر ہجرت پر مجبور ہو چکے ہیں۔ اس طرح اس سال ہر ہفتے میں اسرائیل نے تین فلسطینیوں کو بے گھر کیا ہے۔مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق رپورٹ میں بتایا گیا کہ اسرائیلی فوج نے بیت لحم کے گاں الخضر میں فلسطینیوں کی چھ ایکڑ اراضی پر قبضے کے احکامات جاری کردیے ہیں، اسی طرح الخلیل میں حرم ابراھیمی کے قریب دو سو مربع کلومیٹر اراضی پر قبضے کا خطرہ بھی بڑھ گیا ہے۔اپنی ہفتہ وار رپورٹ میں اوچا کا مزید کہنا تھا کہ نابلس کے دو گاو¿ں عورتا اور بورین میں بھی آٹھ فلسطینی خاندانوں کی 647 ایکڑ اراضی پر قبضے کے نوٹسز جاری کردیے گئے ہیں۔ دو ہفتے قبل طوباس میں اسرائیلی فوج کے ممنوعہ علاقے کے سامنے فلسطینی علاقے یرزا میں سترہ فلسطینی گھروں میں جاری تعمیری کام رکوایا گیا ہے۔

مزید : عالمی منظر