سول سیکرٹریٹ کمیٹی روم میں ڈینگی روک تھام کے حوالے سے اجلاس

سول سیکرٹریٹ کمیٹی روم میں ڈینگی روک تھام کے حوالے سے اجلاس

  



لاہور(جنرل رپورٹر) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی ذاتی دلچسپی، دن رات کی محنت ، سرکاری محکموں کی جدو جہد اور عوام کے بھرپور تعاون کی وجہ سے حکومت ڈینگی کے مرض کو کنٹرول کرنے میں کامیاب ہوئی ہے۔ اس کا میابی کو برقرار رکھنے کیلئے تمام سٹیک ہولڈرز کو اپنی کوششیں اور عملی اقدامات مربوط طریقہ سے جاری رکھنا ہوں گے۔ ان خیالات کا اظہار وزیراعلیٰ پنجاب کے معاون خصوصی برائے صحت خواجہ سلمان رفیق نے سول سیکرٹریٹ کمیٹی روم میں ڈینگی کی تازہ صورتحال اور اس کی روک تھام کے سلسلے میں جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں ایڈیشنل چیف سیکرٹری پنجاب سہیل عامر، سیکرٹری صحت کیپٹن (ر)عارف ندیم، سیکرٹری زراعت میاں مشتاق احمد، سیکرٹری ماحولیات سعید واہلہ ، کمشنر لاہور جواد رفیق ملک، ڈی سی او لاہور نورالامین مینگل ، ڈائریکٹر جنرل پی آئی ٹی بی عامر چوہدری ، چیف منسٹر ڈینگی ریسرچ سیل کے انچارج ڈاکٹر وسیم اکرم، ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل ویکٹر بارن ڈیزیز ڈاکٹر جعفر الیاس، ای ڈی او ہیلتھ لاہور ڈاکٹر ظفر اقبال نیازی ، لوکل گورنمنٹ اور دیگر محکموں کے سینیئر افسران نے شرکت کی۔ سیکرٹری صحت پنجاب عارف ندیم نے کہا کہ یہ پہلا موقع ہے کہ حکومت کو ڈینگی جیسے مرض پر قابو پانے میں اتنی بڑی کامیابی ملی ہے اور گزشتہ سال کی وبا کو رواں سال پھیلنے سے پہلے کنٹرول کر لیا گیا ہے۔جس کے لئے تمام محکموں نے بہت محنت سے کام کیا ہے اور معاشرے کا ہر طبقہ ، عوام اور میڈیا نے حکومتی کاوشوں اور کامیابی کو سراہا ہے۔ سیکرٹری صحت نے کہا کہ ڈینگی کے مرض کو مستقل کنٹرول میں رکھنے کے لئے تمام محکموں کو باہمی کوآرڈینیشن کے ساتھ اقدامات جاری رکھنا ہوں گے۔ اس موقع پر ڈاکٹر وسیم اکرم نے بتایا کہ سری لنکا میں گزشتہ 50سال کی جدوجہد کے باوجود رواں سال بھی 48ہزار سے زائد ڈینگی کے کیسز رپورٹ ہوئے ہیں لیکن اللہ کے فضل سے پنجاب حکومت اس وبا پر قابو پانے میں کامیاب رہی ہے جس میں وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی ذاتی محنت کے علاوہ سرکاری محکمو ں، عوام ، سول سوسائٹی اور میڈیا نے بھرپور کردار ادا کیا ہے۔ خواجہ سلمان رفیق نے ڈینگی کے مریضوں کے علاج و نگہداشت کے حوالے سے سرکاری ہسپتالوں کے ڈاکٹرز ، نرسز اور دیگر سٹاف کی خدمات پر انہیں خراج تحسین پیش کیا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...