توہین رسالت کو قابل سزا جرم قرار دیاجائے،عالمی سطح پر قانون سازی ہونی چاہیے،وزیراعظم

توہین رسالت کو قابل سزا جرم قرار دیاجائے،عالمی سطح پر قانون سازی ہونی ...

  



لاہور(نمائندہ خصوصی(وزیراعظم راجہ پرویز اشرف نے کہا ہے کہ رسول کی شان مےںگستاخی کسی صورت برداشت نہیں‘ اقوام متحدہ قانون سازی کرے‘ یوم عشق رسول پر مٹھی بھرلوگوں نے توڑ پھوڑ کی اور جلاﺅ گھیراﺅ کیا‘ عوام سے اپیل کرتے ہیں کہ پرامن احتجاج کریں۔امریکہ میں بننے والی گستاخانہ فلم کیخلاف پوری مسلم امہ سراپا احتجاج ہے‘ صدر مملکت آصف علی زرداری کے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب کامحور بھی یہی ہو گا‘ حکومت پاکستان اس سلسلہ میں او آئی سی اورمسلمان ممالک کے سفیروں سے بھی رابطے میں ہے‘ انبیاءکرام ؑ کی شان میں گستاخی کو قابل سزا جرم قرا دیا جانا چاہئے اور اس حوالے سے عالمی سطح پر قانون سازی ہونی چاہئے، لاہور میں شوز فیکٹری آتشزدگی میں جا ںبحق ہونے والوں کے لواحقین میں چیک تقسیم کرنے کی تقریب سے خطاب کر رہے تھے۔انہوں نے کہا کہ فیکٹری میں آتشزدگی بڑا سانحہ تھا جاں بحق ہونے والوں کے لواحقین کے غم میں برابر کے شریک ہیں۔ انہوں نے کہا کہ معاوضہ انسانی زندگی کا نعم البدل نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ واقعہ میں جاں بحق ہونے والوں کیلئے چار‘ چار لاکھ اور زخمیوں کیلئے ایک ایک لاکھ روپے دے رہے ہیں۔ پانچ‘ پانچ لاکھ روپے وزارت محنت کی طرف سے دیئے جائیں گے جبکہ فریال تالپور بھی دو‘ دو لاکھ روپے دیں گی۔ وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف نے کہاکہ نبی کریم حضرت محمد ﷺکی شان میں گستاخی پر تمام ممالک میں احتجاج ہوا جبکہ پاکستان میں مسلمانوں کے ساتھ ساتھ دیگر تمام مذاہب کے لوگوں نے بھی گستاخانہ فلم کیخلاف احتجاج کیا اور حکومت نے فیصلہ کیا کہ یوم عشق رسول اور یوم احتجاج منایاجائے اور عام تعطیل کا بھی اعلان کیا گیا تاکہ یہ پیغام دیاجائے کہ حضرت محمد ﷺ کی شان میں کوئی بھی مسلمان گستاخی برداشت نہیں کرسکتا۔ گورنر پنجاب سردار لطیف کھوسہ نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ متاثرین کو پیشکش کرتے ہیں کہ ان کے بچوں کو یونیورسٹیوں اور تعلیمی اداروں میں مفت تعلیم دی جائیگی اور انہیں ملازمتوں کی فراہمی کے ساتھ ساتھ دیگر بنیادی سہولیات بھی فراہم کی جائینگی۔ وزیر اعظم کی تقریر کے دوران سابق مسیحی رکن اسمبلی نے کہا کہ مردان میں 21 ستمبر کو احتجاج کے دوران چرچ جلا دیا گیا ہے جس پر وزیر اعظم نے کہا کہ اس واقعہ کی ہر سطح پر مذمت کی گئی کیونکہ اسلام رواداری کا مذہب ہے اور پاکستان میں بسنے والے تمام مذاہب کے لوگ ہمارے بھائی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ چرچ کو جلانے کے واقعہ میں ملوث افرادکیخلاف کارروائی کی جائیگی اور وفاقی حکومت چرچ کودوبارہ تعمیر کریگی۔

مزید : صفحہ اول


loading...