غلام احمد بلور کا بیان اشتعال انگیز ہے،امریکہ ،حکومتی پالیسی سے کوئی تعلق نہیں پاکستان

غلام احمد بلور کا بیان اشتعال انگیز ہے،امریکہ ،حکومتی پالیسی سے کوئی تعلق ...

  



واشنگٹن، اسلام آباد، لندن (آن لائن، بیورو رپورٹ) امریکی محکمہ خارجہ نے عوامی نیشنل پارٹی کے رہنما اور وفاقی وزیر برائے ریلوے غلام احمد بلور کی جانب سے پیغمبر اسلام کے بارے میں توہین آمیز فلم بنانے پر فلمساز کو قتل کرنے پر انعام دینے کی رقم کے اعلان پر مذمت کی ہے جبکہ پاکستانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ حکومت پاکستان کا وفاقی وزیر کے بیان سے کوئی تعلق نہیں ۔ دوسری جانب برطانوی حکومت نے بلور خاندان پر برطانیہ داخلہ پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ امریکہ نے وفاقی وزیر برائے ریلوے غلام احمد بلور کی جانب سے گستاخانہ فلم بنانے والے کے سر کی قیمت مقرر کرنے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستانی وزیر کا یہ بیان انتہائی غیر ذمہ دارانہ اور اشتعال انگیز ہے امریکی محمکہ خارجہ کے ایک اہلکار نے برطانوی خبر رساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ اسلام مخالف فلم بنانا یقینی طور پر ایک قابل مذمت اقدام تھا، صدر اوباما اور وزیر خارجہ ہیلری کلنٹن واضح طور پر فلم میکرز کے اس اقدام کو قابل نفرت قرار دے چکے ہیں، اور واضح کرچکے ہیں کہ اس سے امریکی حکومت کا کوئی تعلق نہیں اور نہ ہی کسی بھی مذہب کی توہین کرنا امریکہ کی پالیسی ہے۔ تاہم امریکی اہلکار کا کہنا تھا کہ امریکی قیادت کی جانب سے قابل مذمت اقدام قرار دینے کے بعد فلم کے خلاف ہونے والے تشدد کا کوئی جواز نہیں جس میں انہوں نے فلم بنانے والے کے سر کی قیمت مقرر کی ہے۔ علاوہ ازیں اسلام آباد میں پاکستانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے پیر کو جاری کردہ ایک بیان میں کہا ہے کہ وفاقی وزیر بلور کا اعلان ان کے ذاتی خیالات کی نمائندگی کرتا ہے جن کا حکومت پاکستان کی پالیسی سے کوئی تعلق نہیں ۔ اس سے قبل وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کے ایک ترجمان نے بھی وفاقی وزیر کے متنازع بیان کو ان ذاتی رائے قرار دے کر اس سے لاتعلقی کا اظہار کیا تھا جبکہ غلام احمد بلور کی اپنی سیاست جماعت، عوامی نیشنل کے قائدین کی طرف سے بھی اس کی سخت مذمت کرتے ہوئے تادیبی کارروائی کا عندیہ دیا گیا ہے۔ لندن سے بیورو رپورٹ کے مطابق برطانوی اراکین پارلیمینٹ نے پاکستان کے وزیر ریلوے غلام احمد بلور کے برطانیہ داخلہ پر پابندی کا مطالبہ کردیا ہے، اسلام مخالف فلم بنانے والے ٹیری جونز کے سر کی قیمت ایک لاکھ ڈالر مقرر کرنے والے وفاقی وزیر کو انتہا پسند قرار دیا گیا ہے اور کہا ہے کہ یورپ امریکہ اور برطانیہ میں کسی انتہا پسند کو داخلہ کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔ کنزرویٹو پارٹی کے رکن پارلیمینٹ نے غلام احمد بلور کو پیغام دیا ہے کہ وہ برطانیہ آنے سے گریز کریں کیونکہ برطانیہ میں ان کی موجودگی عوام کے لئے بدشگونی کا باعث بنے گی۔ ایک رکن پارلیمینٹ نے کہا ہے کہ وہ ایسے انتہا پسند کو اپنی سر زمین پر دیکھنا پسند نہیں کریں گے۔ علاوہ ازیں برطانوی حکومت نے بلور خاندان پر برطانیہ میں داخلہ پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ یہ امر قابل ذکر ہے کہ بلور خاندان کی برطانیہ میں ذاتی جائیداد ہے جبکہ غلام احمد بلور ہر سال گرمیوں میں اپنے بھائی کے ساتھ تعطیلات گزارتے ہیں۔

مزید : صفحہ اول


loading...