سپریم کورٹ کے نکتہ نظر کے مطابق خط کے مندرجات میں ترامیم ہوگی: قمرزمان

سپریم کورٹ کے نکتہ نظر کے مطابق خط کے مندرجات میں ترامیم ہوگی: قمرزمان
سپریم کورٹ کے نکتہ نظر کے مطابق خط کے مندرجات میں ترامیم ہوگی: قمرزمان

  



اسلام آباد(ثناءنیوز)وفاقی وزیر اطلاعات ونشریات قمر زمان کائرہ نے کہا ہے کہ عدالت عظمیٰ میں این آراو عملدرآمد کیس میں حکومت کی جانب سے پیش کیا جانے والا خط سابق اٹارنی جنرل ملک قیوم کے خط کی واپسی کا سفر ہو گا۔ عدالت عظمیٰ کے نکتہ نظر کے مطابق خط کے مندرجات میں ترامیم ہو سکے گی ۔ درمیانی راستہ عدالت عظمیٰ نے نکالا ہے ۔ حکومت نے قطعا یوٹرن نہیں لیا ۔ عام انتخابات مین 6,5 ماہ رہ گئے ہیں ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیر کو پارلیمینٹہاﺅس میں پارلیمانی قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ این آر او عملدرآمد کیس کے حوالے سے سابق وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی کے وقت عدالت میں صورت حال مختلف تھی اب عدالت عظمیٰ نے درمیانی راستہ تجویز کیا ہے ۔ عدالت عظمیٰ نے کھڑکی کھولی ہے اس سے حکومت کے لئے مواقع پیدا ہوئے ہیں۔ عدالت عظمیٰ نے بھی کہا ہے کہ صدر مملکت ان کے بھی صدر ہیں اور وہ ان کے خلاف مقدمات نہیں کھلوانا چاہتی ۔ انہوں نے کہا کہ وفاق کے تحفظات کو اہمیت دی گئی ہے ہم نے بھی عدالت کی بات کو تسلیم کرلیا ہے انہوں نے کہا کہ خط لکھنا نہ لکھنا اب پرانی بات ہو گئی ہے حکومت کی جانب سے خط کا ڈرافٹ سپریم کورٹ میں پیش کردیا جائے گا راستہ تجویز گیا ہے ۔ مسودے پر اگر عدالت کو کوئی اعتراض ہوا تو مندرجات میں ترامیم کرلی جائیں گی اور خط آگے بھجوا دیا جائے گا اس بارے میں شیڈول بھی طے کرلیا جائے گا۔

مزید : صفحہ اول


loading...