گستاخ فلم کی مذمت کرتا ہوں،احتجاج بلاجواز ہے ، لیبیا میں سفارتخانے نہیں امریکہ پر حملہ کیا گیا:اوباما

گستاخ فلم کی مذمت کرتا ہوں،احتجاج بلاجواز ہے ، لیبیا میں سفارتخانے نہیں ...
 گستاخ فلم کی مذمت کرتا ہوں،احتجاج بلاجواز ہے ، لیبیا میں سفارتخانے نہیں امریکہ پر حملہ کیا گیا:اوباما

  



نیو یارک (مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی صدر بارک اوباما نے گستاخ فلم کی باضابطہ طور پر شدید مذمت کرتے ہوئے اس فلم پر احتجاج بلاجواز قراردے دیا ہے اور کہا ہے کہ امریکہ کا گستاخانہ فلم سے کوئی تعلق نہیں، یہ غیر مہذب اور قابل نفرت فلم ہے جس سے امریکہ کی بے عزتی ہوئی ہے۔جبکہ مسلمانوں کے رسولﷺ کی توہین کرنے والوں کی مستقبل میں کوئی جگہ نہیں۔اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کسے خطاب کرتے ہوئے امریکی صدر نے کہا کہ گستاخ فلم پر احتجاج کے دوران سفارتکاروں پر حملے بین الاقوامی قوانین کی توہین ہے۔ انہوں نے اپنا یہ موقف دوہرایا کہ گستاخ فلم کا امریکی حکومت اور عوام سے کوئی تعلق نہیں لیکن اس کے باوجود اس فلم کی وجہ سے امریکہ کی پوری دنیا میں بدنامی ہوئی ، توہین آمیز فلم امریکہ میں رہنے والے لاکھوںمسلمانوں کے لیے بھی تشویش کا باعث بنی ہے،آزادی اظہارِ رائے کامطلب شرپسندی پھیلانا نہیں۔اگرچہ مذ ہبی آزادی ہر ملک کے عوام کاحق ہے اور امریکہ مذاہب کے تحفظ پر یقین رکھتا ہے تاہم گستاخانہ فلم کے خلاف پر تشدد احتجاج بلا جواز ہے۔سفارتکاروں پر حملے بین الاقوامی قوانین کی توہین کے مترادف ہیں تاہم مختلف ملکوں میں امریکی سفارتکاروں کا تحفظ قابلِ ستائش ہے ۔انہوں نے ایران پر الزام لگایا کہ وہ لیبیا میں غیر ملکی دہشت گردوں کی مدد کر رہاہے جہاں امریکی سفیر کو قتل کیا گیا۔ انہوں نے لیبیا میں گستاخ فلم کے احتجاج کے دوران امریکی سفیرکے قتل کی مذمت کرتے ہوئے اسے افسوسناک قرار دیا اور کہا کہ ہم اپنے سفیر کے قاتلوں کو ڈھونڈ نکالیں گے کیونکہ بن غازی میں امریکی سفارتخانے پر حملہ درحقیقت امریکہ پر حملہ تھا۔ انہوں نے عرب ممالک میں تبدیلی لانے والی قوتوں کی حمایت کا اعلان اور لیبیا ومصر میں جمہوریت کاخیر مقدم کیا اور کہا کہ شام میں بشار الاسد کی حکومت کا خاتمہ ہو نا چاہیے۔ امریکی صدر نے الزام لگایا ہے کہ ایران مسلسل لیبیا میں غیر ملکی دہشت گردوں کی مدد کر رہا ہےجہاں امریکی سفیر کو قتل کیا گیا۔

مزید : بین الاقوامی


loading...