شمالی وزیرستان ،ڈرون حملے میں 10شدت پسند ہلاک پاکستان کی مذمت

شمالی وزیرستان ،ڈرون حملے میں 10شدت پسند ہلاک پاکستان کی مذمت

  

                           میران شاہ(ای این این)شمالی وزیرستان میں ایک اور امریکی ڈرون حملہ،دو غیر ملکیوں سمیت10شدت پسند ہلاک،2زخمی ہو گئے،امریکی جاسوس طیاروں نے لواڑا منڈی میںکمپاو¿نڈ اور گاڑی کو4گائیڈڈ میزائلوں سے نشانہ بنایا،نچلی پروازوں کے باعث علاقے میں خوف و ہراس۔تفصیلات کے مطابق بدھ کو امریکہ نے ڈیڑھ ماہ کے وقفے کے بعد ایک بار پھر شمالی وزیرستان کی تحصیل دتہ خیل میں پاک افغان سرحد پر لواڑا منڈی میں دہشتگردوں کے مبینہ کمپاو¿نڈ اور اس کے اندر کھڑی گاڑی کو چار گائیڈڈ میزائلوں سے نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں وہاں موجود10مبینہ دہشتگرد ہلاک اور دو زخمی ہو گئے۔مارے جانے والوں میں8مقامی اور دو غیر ملکی باشندے شامل تھے تاہم غیر ملکی میڈیا کے مطابق مارے جانے والوں میں اکثریت غیر ملکیوں کی تھی جن کی تاحال شناخت نہیں ہوسکی۔ڈرون حملے میں کمپاو¿نڈ اور گاڑی مکمل طور پر تباہ ہو گئے۔واقعہ کے بعد مقامی لوگوں نے تباہ شدہ کمپاو¿نڈ کے ملبے سے لاشوں اور زخمیوں کو نکالا۔ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ہے۔علاقے میں موجود سکیورٹی حکام نے واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ یہ علاقہ شمالی وزیرستان کے ہیڈکوارٹر میران شاہ سے 45 کلومیٹر دور مغرب کی جانب پاک افغان سرحد کے قریب ہے ۔سیکورٹی حکام نے مارے جانے والوں کی شناخت کے حوالے سے کچھ نہیں بتایا۔امریکی ڈرون طیارے حملے سے قبل اور بعد بھی علاقے پر نچلی پروازیں کرتے رہے جس کے باعث لوگوں میں خوف و ہراس پھیل گیا۔امریکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق شمالی وزیرستان میں سکیورٹی حکام نے واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے کہاہے کہ تحصیل دتہ خیل کے علاقے میں امریکی جاسوس طیاروں نے لواڑہ منڈی کے قریب ایک چھوٹی مارکیٹ میں شدت پسندوں کی گاڑی کو نشانہ بنایاہے۔اس علاقے میں پاک فوج کا آپریشن ضرب عضب جاری ہے جس کے باعث مقامی لوگوں کی بڑی تعداد بنوں اور دیگر علاقوں میں نقل مکانی کرچکی ہے ۔اس سے قبل 6اگست کو آخری بار امریکی ڈرون طیاروں نے لواڑہ منڈی کے علاقے میں ہی شدت پسندوں کے ایک کمپاﺅنڈ کو نشانہ بنایا تھا جس کے نتیجے میں غیر ملکیوں سمیت 7دہشتگرد مارے گئے تھے ۔

مزید :

صفحہ اول -