داتا دربار کی حدود میں منشیات فروشی عام نشے کی زیادتی سے انسانی جانیں ضائع ہونے لگیں

داتا دربار کی حدود میں منشیات فروشی عام نشے کی زیادتی سے انسانی جانیں ضائع ...
داتا دربار کی حدود میں منشیات فروشی عام نشے کی زیادتی سے انسانی جانیں ضائع ہونے لگیں
کیپشن: bhati gat

  

لاہور(کرائم سیل)تھانہ داتا دربار کی حدود میں منشیات فروشی عام ہو گئی، آئے روز نشہ کی زیادتی سے قیمتی انسانی جانوں کا ضیاع معمول کی بات بن گئی ہے۔گزشتہ روز بھی ایک نشئی نشہ کی زیادتی کی وجہ سے میٹرو بس پل کے نیچے مردہ پایا گیا۔تفصیلات کے مطابق تھانہ داتا دربار کے علاقہ میں منشیات کی سرعام فروخت نے اس علاقہ کو نشئیوں کے لیے ’’جنت ‘‘بنا دیا ہے۔ آئے روز نشہ کی زیادتی کی وجہ سے تھانہ داتا دربار کی حدود میں نشئیوں کی اموات ہو جاتی ہیں جبکہ پولیس کی جانب سے منشیات فروشی کی روک تھام کے لیے کوئی خاطر خواہ کارروائی نہیں کی گئی ہے۔گزشتہ روز مقامی افراد کو مدرسہ حزب الاحناف کے قریب میٹرو بس پل کے نیچے سے ایک نشئی کی نعش ملی جس پر انہوں نے پولیس کو اطلاع دی جنہوں نے موقع پر پہنچ کر جائے وقوعہ سے شواہد اکٹھے کر کے نعش کو قبضے میں لے لیا اور کوئی شناختی دستاویز برآمد نہ ہونے پر اسے پوسٹ مارٹم کے لیے مردہ خانہ میں جمع کروا دیا ہے جبکہ ورثا کی تلاش شروع کر دی گئی ہے۔پولیس کے مطابق متوفی کی عمر 36سال کے قریب معلوم ہوتی ہے ۔موت کی اصل وجوہات پوسٹ مارٹم رپورٹ سامنے آنے پر ہی پتہ چلیں گی۔

مزید :

علاقائی -