حد سے زیادہ مچھلی کھانے والا موت کی دہلیز پر

حد سے زیادہ مچھلی کھانے والا موت کی دہلیز پر
حد سے زیادہ مچھلی کھانے والا موت کی دہلیز پر

  

بیجنگ (نیوز ڈیسک) سوشی کچی مچھلی کی ڈش ہے جو جاپان اور چین کے علاوہ مغربی ممالک میں بھی مقبول ہے لیکن ایک چینی شخص کو سوشی کی شو قینی بہت مہنگی پڑگئی۔ گوانگ ڈونگ صوبے سے تعلق رکھنے والا یہ شخص سوشی کو بہت زیادہ پسند کرتا ہے۔ سوشی چاول کے کوفتوں اور ساشیمی کہلانے والی کچی مچھلی پر مشتمل ہوتی ہے۔ اس شخص کو معدے میں تکلیف اور جلد میں جلن کی شکایت ہوئی تو یہ ڈاکٹر کے پاس چلا گیا۔ ڈاکٹر نے جب اس کے ایکسرے اور دیگر ٹیسٹ کئے تو ایک خوفناک تصویر سامنے تھی۔ اس شخص کے سارے جسم میں رینگنے والے کیڑے نظر آرہے تھے جو سر سے لے کر پیروں تک کی جلد میں نطر آرہے تھے۔ گوانگ زو ہسپتال کے ماہرین نے پتہ چلایا کہ اس شخص نے سوشی میں موجود کچی مچھلی یعنی ساشیمی کھائی تھی اور اسی کی وجہ سے اس کا یہ حال تھا۔ تحقیق سے معلوم ہوا کہ مچھلی میں ٹیپ ورم نامی کیڑے کے انڈے تھے جو جسم میں جاکر کیڑوں میں بدل گئے تھے۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ کچے یا کم پکے ہوئے گوشت میں جراثیم اور ٹیپ ورم کے انڈے ہوسکتے ہیں لہٰذا اس سے مکمل پرہیز کرنا چاہیے۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ اگر یہ شخص ہسپتال آنے میں مزید تاخیر کرتا ہے تو اس کی جان بھی جاسکتی تھی۔

مزید :

تعلیم و صحت -